وزیر کوٹ کسی جگہ کا نام نہیں


naseer nasir وزیر کوٹ کسی جگہ کا نام نہیں
تو پھر وہ کیا ہے،
کس اٹلس کا علاقہ ہے،
کون سی نقطہ گاہ ہے
جہاں وہ دھرتی کا ابھار بن کر
حالتِ دوام میں لیٹا ہوا
زمانوں کا سکوت نظما رہا ہے

وزیر کوٹ، جہاں میں کئی بار گیا ہوں
اور پاپلر کی لمبی قطاروں کے درمیان
ایک مدبر سائے کے ساتھ سیر کرتے ہوئے
wazir2کتنی جگہوں اور نا جگہوں سے گزرا ہوں
جہاں کتابوں کے ڈھیر میں بچھے ہوئے
صوفوں پر
لوگوں کے بجائے لفظوں کو
آرام کرتے ہوئے دیکھا
اور بُھنے ہوئے پنیر اور چائے کی تواضع میں
دو چھوٹی چھوٹی آنکھوں کو
آنے والوں کی محبت
اور خوشی سے لبریز پایا

وزیر کوٹ کسی جگہ کا نام نہیں
wazirوزیر کوٹ ایک شخص تھا
شخصیت سے اٹا اٹ
آنکھوں، سایوں، باتوں اور لفظوں سے بھرا ہوا
جو کسی کو خالی نہیں ہونے دیتا تھا!

(وزیر آغا کی یاد میں)


Comments

FB Login Required - comments

2 thoughts on “وزیر کوٹ کسی جگہ کا نام نہیں

  • 06-04-2016 at 4:08 pm
    Permalink

    ” ایک مدبر سائے کے ساتھ سیر کرتے ہوئے
    کتنی جگہوں اور نا جگہوں سے گزرا ہوں“
    ” وزیر کوٹ ایک شخص تھا
    شخصیت سے اٹا اٹ“
    اتنی مختصر نظم کا آہنگ بھی اتنا بلند ہے کہ دونوں شخصیات کا ایک قوسی امیج بنا دکھائی دینے لگتا ہے۔ ایک مدبر اور ذہین قوسی امیج

  • 10-04-2016 at 2:59 pm
    Permalink

    وزیر کوٹ ایک شخص تھا
    آنکھوں، سایوں ، اور لفظوں سے بھرا ہوا
    جو کسی کو خالی نہیں ہونے دیتا تھا

    جب آپ جیسے بھرے ہوئے لوگ ان سے ملتے جاتے تھے تو وزیر کوٹ کا دامن مزید تتلیوں اور جگنوؤں جیسی باتوں بھر جاتا تھا۔

Comments are closed.