سوئٹزرلینڈ میں براہمداغ کی سیاسی پناہ کی درخواست مسترد


brahmdagh ایک نجی ٹی وی چینل نے ذرائع کے حوالے سے کہا ہے کہ سوئٹزرلینڈ حکام نے خود ساختہ جلاوطن بلوچ رہنما نواب براہمداغ بگٹی کی سیاسی پناہ کی درخواست مسترد کردی۔تاہم اس رپورٹ کی بلوچستان کی سیاست پر گہری نظر رکھنے والے مقامی ذرائع سے توثیق نہیں ہوسکی.اس تمام معاملے پر گہری نظر رکھنے والے ذرائع نے کالعدم بلوچ ریپبلیکن آرمی (بی آر اے) کے سربراہ برہمداغ بگٹی کی سوئٹزرلینڈ میں سیاسی پناہ کی درخواست کی تصدیق کی، تاہم درخواست پر کسی فیصلے کی تصدیق نہیں ہوسکی۔
ایک مقامی ٹیلی ویژن چینل نے اپنی رپورٹ میں دعویٰ کیا کہ پاکستان کی جانب سے دہشت گرد قرار دیئے جانے کے باعث سوئس امیگریشن حکام نے براہمداغ بگٹی کی سیاسی پناہ کی درخواست مسترد کی۔تاہم بلوچ رہنما سیاسی پناہ کی درخواست مسترد کرنے کے فیصلے کے خلاف اپیل کا حق رکھتے ہیں۔
واضح رہے کہ براہمداغ بگٹی گزشتہ کئی سالوں سے بیرون ملک جلاوطنی کی زندگی گزار رہے ہیں۔انہوں نے گزشتہ برس اگست میں بھی انٹرویو کے دوران بلوچستان کے مسئلے پر مذاکرات کے لیے آمادگی ظاہر کرتے ہوئے کہا تھا کہ اگر بلوچ عوام چاہتے ہیں تو وہ آزاد بلوچستان کے مطالبے سے دستبردار ہونے کے لیے تیار ہیں۔
براہمداغ بگٹی کے اس انٹرویو کے تین ماہ بعد ا±س وقت کے وزیراعلیٰ بلوچستان ڈاکٹر عبد المالک بلوچ اور وفاقی وزیر سیفران عبد القادر بلوچ نے ان سے ملاقات کی جس کی براہمداغ بگٹی نے تصدیق بھی کی، لیکن ان کا کہنا تھا کہ وزیراعلیٰ بلوچستان اس معاملے میں بے اختیار ہیں اور جن کے پاس اختیار ہیں انہیں مجھ سے ملاقات کرنی چاہیے۔


Comments

FB Login Required - comments