خاتون سیاستدان نے مبینہ فحش ویڈیو لیک ہونے پر سیاست سے کنارہ کشی کرلی


عراق میں پارلیمان کے انتخابات ہونے جا رہے ہیں جن میں انتضار احمد جسیم نامی ایک خاتون امیدوار بھی حصہ لے رہی تھیں لیکن گزشتہ دنوں اس کی ایسی شرمناک ویڈیو لیک ہو گئی کہ وہ ہمیشہ کے لیے سیاست سے ہی کنارہ کشی پر مجبور ہو گئیں۔ سی این این کے مطابق گزشتہ دنوں سوشل میڈیا پر 3منٹ کی ایک ویڈیو وائرل ہو گئی جس میں ایک مرد اور خاتون قابل اعتراض حالت میں ہوتے ہیں اور مبینہ طور پر کہا جا رہا ہے کہ ویڈیو میں موجود خاتون انتضار احمد جسیم تھیں۔

رپورٹ کے مطابق عراقی صارفین کی اکثریت کا کہنا ہے کہ ”ویڈیو میں موجود خاتون کی آواز، شکل و شباہت اور جو کچھ خود اس نے اپنے بارے میں ویڈیو میں کہا، اس سے ثابت ہوتا ہے کہ وہ جسیم ہی ہیں۔“ جسیم کی طرف سے تردیدی بیان میں کہا گیا ہے کہ ”یہ ویڈیو قطعی طور پر جعلی ہے اور مجھے اپنی قوم پر افسوس ہے جو مخالف سیاستدانوں کی بنائی گئی جعلی ویڈیو پر یقین رکھتی ہے۔ ہر کوئی میرے خاندان کو اور میرے شوہر ڈاکٹر سعد صالح الحمدانی کو جانتا ہے۔ لوگوں کو یہ سوچنا چاہیے تھا کہ میں اس ملک کی بیٹی ہوں، انہیں افواہوں پر کان نہیں دھرنے چاہئیں تھے۔“ واضح رہے کہ جسیم نے معاشیات میں پی ایچ ڈی کر رکھی ہے اور عراقی دارالحکومت بغداد کی المستنصریہ یونیورسٹی میں پروفیسر ہیں۔

بشکریہ؛ ڈیلی پاکستان

image_pdfimage_print

Comments - User is solely responsible for his/her words

اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ ”ہم سب“ ایک مثبت سوچ کو فروغ دے کر ایک بہتر پاکستان کی تشکیل میں مدد دے رہا ہے تو ہمارا ساتھ دیں۔ سپورٹ کے لئے اس لنک پر کلک کریں