تھر میں غذائی قلت اور مختلف بیماریوں سے 8 بچے دم توڑ گئے


\"thar\" تھر میں غذائی قلت اور مختلف بیماریوں کے باعث مزید 8 بچے دم توڑ گئے جس کے بعد رواں ماہ جاں بحق ہونے والے بچوں کی تعداد 58 ہو گئی ہے۔ایک نجی ٹی وی چینل کے مطابق سول ہسپتال مٹھی میں ہستو، سومار سموں اور پپو کھتری کے بچوں نے دم توڑا جب کہ ننگر پارکر کے تعلقہ اسپتال میں بالو کولہی کا بچہ جان کی بازی ہارا۔ اس کے علاوہ تھرپارکر کے گاو¿ں آدم رند میں حیدر رند کی ایک سالہ بچی نازیہ اور 7 روز کی بچی پروین جاں بحق جب کہ جمیل رند کا نومولود بچہ بھی دم توڑ گیا۔
واضح رہے کہ گزشتہ روز بھی تھر میں غذائی قلت کے باعث 2 بچے دم توڑ گئے تھے جب کہ اس وقت بھی تھر کے مختلف ہسپتالوں میں درجنوں بچے زیر علاج ہیں۔


Comments

'ہم سب' کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ کمنٹ کرنے والا فرد اپنے الفاظ کا مکمل طور پر ذمہ دار ہے اور اس کے کمنٹس کا 'ہم سب' کی انتظامیہ سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

اسی بارے میں: ۔  ذوالفقار بھٹو کی برسی؛ سندھ میں 4 اپریل کوعام تعطیل کا اعلان