دبئی کی پراسرار طور پہ لاپتہ ہونے والی شہزادی کا آخری پیغام


انسانی حقوق کی بین الاقوامی تنظیم ہیومن رائٹس واچ نے متحدہ عرب امارات کے حکمراں راشد المکتوم کی صاحبزادی شیخہ لطیفہ کی طویل پراسرار گمشدگی پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے دبئی کے اعلیٰ حکام سے تفصیلات دینے کا مطالبہ کیا ہے۔

برطانوی نشریاتی ادارے کے مطابق متحدہ عرب امارات کے حکمراں راشد المکتوم کی صاحبزادی شیخہ لطیفہ رواں سال مارچ میں اپنے دوستوں کے ہمراہ بیرون ملک فرار ہوتے ہوئے لاپتہ ہو گئی تھیں۔ شیخہ لطیفہ کے دوستوں کا کہنا ہے کہ انہیں سیکیورٹی اہلکار اپنے ہمراہ لے گئے جس کے بعد سے شہزادی کا کسی سے رابطہ نہیں ہو سکا ہے۔ انسانی حقوق کی عالمی تنظیم ہیومن رائٹس واچ نے شہزادی سے متعلق آگاہی کے لیے متحدہ عرب امارات کے اعلیٰ حکام سے رابطہ کرلیا ہے۔

جوبرٹ نامی ایک فرانسیسی امریکی شہری نے اپنے ویڈیو پیغام میں دعوی کیا کہ وہ رواں سال مارچ میں باغی شہزادی کے ہمراہ بھارت کے سیاحتی مقام گوا میں موجود تھے۔ شہزادی اپنی مرضی سے زندگی گزارنا چاہتی تھیں اور ہم گوا کے سمندر میں ایک کشتی میں سوار تھے کہ بھارتی کوسٹ گارڈ نے ہمیں گھیرے میں لے کر کشتی کو روک لیا جس کے بعد متحدہ عرب امارات کے کچھ اہلکار کشتی میں آئے اور مار پیٹ کر ہمیں دبئی لے گئے جہاں مجھے ایک ماہ رکھنے کے بعد رہا کردیا گیا تاہم شہزادی کا اب تک کچھ پتہ نہیں ہے۔

واضح رہے کہ اپنی گرفتاری سے قبل دبئی کی باغی شہزادی نے ایک ویڈیو پیغام ریکارڈ کروایا تھا جس میں انہوں نے کہا تھا کہ یہ میری آخری ویڈیو ہو سکتی ہے کیوںکہ شاید آپ کے ویڈیو دیکھنے سے قبل ہی میں یا تو مر چکی ہوں گی یا پھر کسی بہت ہی مشکل صورت حال میں پھنسی ہوں گی، اگر ایسا کچھ ہو جاتا ہے تو آپ لوگ اس ویڈیو کو زیادہ سے زیادہ شیئر کریں۔ اس ویڈیو کے بعد سے دبئی کی باغی شہزادی کا کوئی سراغ نہیں ملا ہے۔

image_pdfimage_print

Comments - User is solely responsible for his/her words

اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ ”ہم سب“ ایک مثبت سوچ کو فروغ دے کر ایک بہتر پاکستان کی تشکیل میں مدد دے رہا ہے تو ہمارا ساتھ دیں۔ سپورٹ کے لئے اس لنک پر کلک کریں