ہندو انتہا پسندوں کی طرف سے ریچا چڈا کو ریپ اور قتل کی دھمکیاں


بالی ووڈ کی بےباک اداکارہ ریچا چڈا کو انتہاپسند ہندوئوں نے خطرناک دھمکیاں دیں لیکن سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر نے انہیں غیر اہم قرار دے کر نظر انداز کردیا۔ بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق ہندو انتہا پسند تنظیم نے ریچا چڈا کو سرعام جنسی زیادتی اور قتل کی دھمکیاں دیں ،دوسری طرف بالی ووڈ کے کئی ستارے میدان میں آئے اور ان دھمکیوں پرکارروائی نہ کرنے پر ٹوئٹر کی انتظامیہ کو آڑے ہاتھوں لیا۔

ریچا چڈا نے آن لائن دھمکیاں ملنے پر ٹوئٹر کی انتظامیہ سے رابطہ کیا ،جس پر ویب سائٹ کے عہداروں نے ان دھمکیوں کو غیر اہم قرا دیا ،دھمکیوں کی رپورٹ کرانے پر ویب سائٹ کی طرف سے آنے والے پیغام کو ریچا چڈا نے ساتھی اداکاروں کو بتایا۔

اداکارہ عالیہ بھٹ، فلم ساز اور اداکارہ فرحان اختر، پوجا بھٹ سمیت فلم انڈسٹری سے وابستہ دیگر افراد نے ریچا چڈا کی حمایت میں بیانات دیے اور انہیں ملنے والی دھمکیوں کی مذمت کی اور کہا کہ ٹوئٹر انتظامیہ کی طرف سے انہیں غیر اہم قرار دینا حیران کن ہے۔

خبر کے مطابق بھارتی اداکارہ نے 5مئی کو ہندی زبان میں ٹوئٹس کئے تھے جس میں ہندو ازم کے خلاف اٹھائی تھی اور کہا تھاکہ ہندو ازم بھارت اور بھارتیوں کے خطرہ ہے۔

جوابی حملہ کرتے ہوئے ایڈووکیٹ وویک گارگ نے ٹوئٹر ہنڈل سے اجتماعی جنسی زیادتی اور قتل کی دھمکیاں دی تھی ،جس میں یہ بھی کہا گیا تھا کہ ریچا چڈا اور ان جیسے 100 مسلمانوں کو روز اکھاڑا جاتا ہے، بھارتی ایجنسز کے ہاتھوں ہر دن ایک ہزار مسلمان موت کے گھاٹ اتارے جاتے ہیں۔

بولی ووڈ میں ریچا چڈا کو ملنے والی دھمکیوں کے بعد سامنے آنے والے ردعمل کے پیش نظر ٹوئٹر انتظامیہ نے دھمکیاں دینے والے شخص کا اکائونٹ معطل کردیا ہے جبکہ اس سے قبل یہی انتظامیہ ان دھمکیوں کو غیر اہم قرار دے چکی تھی ۔

image_pdfimage_print

Comments - User is solely responsible for his/her words

اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ ”ہم سب“ ایک مثبت سوچ کو فروغ دے کر ایک بہتر پاکستان کی تشکیل میں مدد دے رہا ہے تو ہمارا ساتھ دیں۔ سپورٹ کے لئے اس لنک پر کلک کریں