منفیے کدھر جائیں!


khawar jamal اگر آپ منفی سوچ کے حامل ہیں تو اس میں کوئی غلط بات نہیں۔ منفی سوچنے سے مراد کسی کے بارے میں برا سوچنا نہیں بلکہ اشارہ ان افراد کی طرف ہے جو عرف عام میں پیسمِسم (Pessimism) کے حامل یعنی منفیت کے اوتار ہوتے ہیں، جو گلاس کو ہمیشہ خالی دیکھتےہیں اور کسی بھی کام کو کرنے سے پہلے یہ سوچتے ہیں کہ اگر میں یہ کروں گا تو کہیں ایسا ویسا کچھ نہ ہو جائے۔ اور اسی چکر میں بہت سے مفید مواقع گنوا دیتے ہیں۔ اچھا سوچنا بھی چاہیں تو تھوڑا سا اچھا سوچتے سوچتے خیالات کے سلسلے میں کوئی انہونا حادثہ در آتا ہے۔

گاڑی گھر سے نکالتے وقت سوچتے ہیں کہ آج راستے میں کہیں خراب نہ ہو جائے۔

دکان کھولتے وقت سوچتے ہیں آج تو خاص بکری نہیں ہو گی۔

نوکری پر جاتے ہوے سوچتے ہیں آج تو باس پھر سے سنائے گا۔

اب تمام دن ڈر ڈر کے گاڑی چلائی کہ اب ہوئی خراب کہ اب ہوئی

سارا دن سوچ سوچ کے گزار دیا کہ گاہک آے گا ، نہیں آئے گا

9 سے 5 تک کڑھ کڑھ کر سوچتے رہے کہ باس ڈانٹے گا یا نہیں ڈانٹے گا

یہ درست ہے کہ ایسی سوچ کو مثبت زاویے میں بدلنا ناممکن حد تک مشکل ہے، لیکن یہ بھی تو سوچیں کہ اگر گاڑی خراب ہو ہی جاتی ہے تو آپ کو کیا پریشانی ہوئی ؟ اپ تو ذہنی طور پر تیار تھے اور اگر نہیں ہوتی تو اور بھی اچھی بات ہے۔

اگر کوئی خریدار نہیں آیا تو اپ کو تو پہلے ہی معلوم تھا کہ آج خالی ہاتھ گھر واپسی ہونی ہے، اور اگر آ جائے تو کیا ہی بات ہے!

اگر باس نے کھری کھری سنا دیں تو جناب اپ اس آفت کے لیے تو گھر سے تیار ہو کر آئے تھے کہ آج تو سنائے گا پھر کمبخت ، اگر نہ سنائے تو ۔۔۔ آہا ۔۔۔۔ مزے !!!

 ٹھیک ہے ، مثبت سوچ رکھنے والے زندگی میں زیادہ حاصل کر لیتے ہیں، لیکن بھائی ہم بے چارے “منفیے ” کہاں جائیں؟

اسکا ایک توڑ ہو سکتا ہے، ” مدافعاتی منفی سوچ “(Defensive Pessimism)

مطلب یہ ہوا کہ اگر آپ نے سوچ ہی لیا ہے کہ استاد جی گڑبڑ ہو ہی جانی ہے تو پھر آپ کو اس کا حل بھی سوچنا ہو گا۔

مثلاً، کالج میں تقریر کرنی ہے ، آپ کا مخالف طالب علم جو یقیناً shinning star student ہو گا، مثبتیا Optimist ہو گا (اور اس تحریر کے مطابق ولن بھی) مکمّل اعتماد کے ساتھ آے گا، تقریر رٹی ہوگی بھائی کو ،بہترین طریقے سے ڈیلیور کرے گا اور یہ جا وہ جا۔۔

ہاں جی ! اب آئیں گے آپ، سوچتے ہوئے کہ برا ہونے والا ہے آپ کے ساتھ، اب سوال ہے کہ ہو کیا سکتا ہے؟

١۔تقریر بھول جائیں گے

٢۔ گلا خشک ہو جائے گا

٣۔ پسینہ آئے گا

تو اب آپ کو کیا کرنا چاہیے؟

١۔ چھوٹے چھوٹے نوٹس بنا کر ساتھ رکھیں تا کے آپ کو ہنٹس ملتے رہیں

٢۔ پانی کا گلاس ساتھ رکھیں ڈائس پر

٣۔ رومال یا کچھ ٹشو جیب میں رکھیں

اس طرح آپ منفی حالات میں بھی پیش رفت جاری رکھ سکیں گے۔۔۔ یہی معاملہ باقی منفی سوچ کے ساتھ بھی روا رکھیں، برا سوچیں اور اس کا حل بھی ساتھ سوچیں تو بیڑے پار ہیں آپ کے!

حاصل کلام یہ ہوا کہ اگر آپ منفی سوچتے ہیں اور برا ہی ہو جاتا ہے تو اسے قبول کریں اور اس کا حل نکالیں ۔ اگر آپ اپنے ساتھ برا ہونے کو قبول نہیں کریں گے، یا اس بارے میں سوچ بھی نہیں سکیں گے تو آپ کبھی اس کا حل نہیں نکل پائیں گے۔ پریشان ہو کر دوران خون کم یا زیادہ ہو سکتا ہے، اس کے علاوہ کچھ ممکن نہیں!


Comments

FB Login Required - comments

خاور جمال

خاور جمال پیشے کے اعتبار سے فضائی میزبان ہیں اور اپنی ائیر لائن کے بارے میں کسی سے بات کرنا پسند نہیں کرتے، کوئی بات کرے تو لڑنے بھڑنے پر تیار ہو جاتے ہیں

khawar-jamal has 18 posts and counting.See all posts by khawar-jamal

One thought on “منفیے کدھر جائیں!

  • 23-04-2016 at 8:33 pm
    Permalink

    یارو۔ یہ وجاہت بھائ کی اعلی ظرفی اور شرافت کی إنتہاہے کہ ایک ہی خاندان کے تین لکھاریوں کو برداشت کر رہے ہیں ۔ شکریہ حُضور

Comments are closed.