میرے پاس جو مواد ہے اس میں عمران خان کے ساتھ اس کی بیوی نہیں ہے


ریحام خان نے اپنی کتاب میں لکھا ہے کہ ایک موقع پر حمزہ علی عباسی جہانگیر ترین کو ایکسپوژ کرکے پارٹی چھوڑنا چاہتے تھے۔

انہوں نے مزید بتایا کہ حمزہ عباسی نے کچھ عرصہ قبل ان سے رابطہ کیا اور کہا کہ اگر کتاب پبلش کی تو پی ٹی آئی نے ایجنسیز کے ذریعے لیپ ٹاپ اور اکاﺅنٹ میں سے انتہائی ذاتی نوعیت کا مواد اکٹھا کر لیا ہے۔ اور اس کے ذریعے وہ ریحام کو کہیں منہ دکھانے کے قابل نہیں چھوڑیں گے۔ اس پر ریحام خان کا جواب تھا کہ میرے حساس مواد میں گفتگو اور ای میلز میرے اپنے شوہر کے ساتھ ہوں گی مگر میرے پاس جو مواد ہے اس میں عمران خان کے ساتھ اس کی بیوی نہیں ہے اس جواب کے بعد حمزہ عباسی کو چپ لگ گئی۔

ریحام خان نے کہا کہ انہوں نے فجر کے وقت کا الارم لگایا ہوتا تھا، وہ چیزوں کو ترتیب سے رکھنے کی عادی ہیں ایسے ہی ایک شب وہ جاگیں تو چیزیں ٹھیک کرتے ہوئے انہیں علم ہوا کہ خفیہ فون کہاں چھپا کر رکھا گیا ہے اور اس میں کیا کچھ ہے اس کے اسکرین شارٹس کی کلر تصاویر کتاب کا حصہ ہیں۔

https://dailypakistan.com.pk/09-Jun-2018/794929

image_pdfimage_print
Comments - User is solely responsible for his/her words


اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ ”ہم سب“ ایک مثبت سوچ کو فروغ دے کر ایک بہتر پاکستان کی تشکیل میں مدد دے رہا ہے تو ہمارا ساتھ دیں۔ سپورٹ کے لئے اس لنک پر کلک کریں