کیا ریحام کے پاس عمران خان کے بلیک بیری سے دھرنا 2014ء کے اصل کردار بےنقاب ہو سکتے ہیں؟


پاکستان تحریک انصاف کے چئیرمین عمران خان کی سابق اہلیہ ریحام خان کی کتاب کا شور مچا ہوا ہے اور اشاعت سے قبل ہی ریحام خان کی کتاب ٹاک آف دی ٹاؤن بن چکی ہے۔ ریحام خان کا کہنا ہے کہ میری اس کتاب میں ایک بلیک بیری کا ذکر ہے جس کی وجہ سے تحریک انصاف گھبراہٹ کا شکار ہے۔

لاہور کے ایک صحافی صابر شاہ کا کہنا تھا کہ میری اطلاعات کے مطابق ریحام خان عید کے بعد بلیک بیری لیکس لانے کو تیار ہیں۔ جس میں مجھے بتایا گیا ہے کہ ٹیلی فون کی پانچ سے چھ کاپیاں لا رہی ہیں اور بقول ریحام خان اس میں غیر اخلاقی پیغامات ہیں۔ ریحام خان کہیں گی کہ بے شک ان پیغامات کا فرانزک کروا لیا جائے۔ صابر شاہ کا کہنا تھا کہ سابق چیف جسٹس افتخار چوہدری نے تو عمران خان پر مقدمہ درج کروایا تھا لیکن اب میرے خیال میں ریحام خان بھی عمران خان کو آرٹیکل 62 اور 63 کے تحت نا اہل کروانے کے لیے میدان میں آئیں گی۔

ریحام خان بہت پر امید ہیں۔ یاد رہے کہ عمران خان کی دوسری سابقہ اہلیہ ریحام خان کی کتاب لانچ ہونے سے قبل ہی متنازع ہو چکی ہے۔۔۔ ریحام خان نے اپنی کتاب میں تحریک انصاف کے چئیرمین عمران خان، ان کے اہل خانہ اور عمران خان کے قریبی دوستوں سے متعلق بھی کچھ ایسی باتیں لکھی ہیں جن سے ریحام خان کی کتاب متنازع قرار پائی ہے۔

ریحام خان کی کتاب میں سب سے اہم بات عمران خان کا “بلیک بیری ‘ ہے۔ میڈیا پر یہ خبریں گردش کرتی رہی ہیں کہ ریحام خان جب طلاق ہونے سے قبل لاہور سے لندن گئی تھیں تو وہ عمران خان کی بلیک بیری ڈیوائس اپنے ساتھ لے آئی تھیں۔ کہا جا رہا ہے کہ عمران خان کے بلیک بیری میں بہت ساری ایسی چیزیں ہیں جو ریحام خان منظر عام پر لے آئیں تو پاکستان تحریک انصاف اور اس کے چئیرمین عمران خان کو بہت نقصان ہو گا۔ اس متعلق ایک صحافی نے دعوی کیا ہے کہ عمران خان کا بلیک بیری ابھی بھی برطانیہ میں موجود ہے اور یہ بلیک بیری ریحام خان نے اپنی کسی دوست کے پاس یا انشورنس کمپنی کے پاس رکھا ہوا ہے۔

صحافیوں کے نزدیک بنیادی سوال یہ ہے کہ کیا عمران خان کے بلیک بیری سے دھرنے کے پس پردہ کرداروں کی نشاندہی ہو سکتی ہے۔ یہ فون اکتوبر 2015 میں اٹھایا گیا۔ کیا اس پر جون 2014 سے دسمبر 2014 تک کی گفتگو موجود ہونے کا قوی امکان ہے؟

image_pdfimage_print
Comments - User is solely responsible for his/her words


اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ ”ہم سب“ ایک مثبت سوچ کو فروغ دے کر ایک بہتر پاکستان کی تشکیل میں مدد دے رہا ہے تو ہمارا ساتھ دیں۔ سپورٹ کے لئے اس لنک پر کلک کریں