سندھ میں پانی کے مسئلے پر فسادات ہوسکتے ہیں: خواجہ اظہار الحسن


izhar ul hasanسندھ اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر خواجہ اظہارالحسن نے کہا ہے کہ سندھ میں پانی کا مسئلہ حل نہ ہوا تو فسادات ہوں گے ، سندھ میں ایک وزیر اعلیٰ نہیں کئی وزرائے اعلیٰ ہیں ، خورشید شاہ وزیر اعظم سے جواب مانگ رہے ہیں ، وزیر اعلیٰ سندھ سے جواب کب مانگیں گے۔ سندھ اسمبلی بلڈنگ میں ایم کیو ایم کے رہنما اور اپوزیشن لیڈر خواجہ اظہار الحسن نے دیگر رہنماو¿ں کے ہمراہ پریس کانفرنس سے کرتے ہوئے کہا کہ گرمیوں میں پانی کا بحران شدت اختیار کر جائے گا۔ خورشید شاہ وفاق میں اپوزیشن لیڈر ہیں۔ میں سندھ میں اپویشن لیڈر ہوں ، جو سوال آپ وزیر اعظم سے کر رہے ہیں وہ ہم وزیر اعلیٰ سندھ سے کر رہے ہیں ، عوامی مسائل حل نہ کرنے اور کرپشن پر وزیراعلیٰ سے جواب کب مانگیں گے ، سندھ میں ایک نہیں کئی وزیر اعلیٰ ہیں۔ ایم کیو ایم کے ممبر سندھ اسمبلی خالد احمد نے کہا کہ سندھ حکومت چاروں صوبوں میں کرپشن کے معاملے میں سب سے آگے ہے۔ پانی کے چار بڑے منصوبے کے لیے بجٹ میں اربوں روپے رکھے گئے لیکن کسی بھی منصوبے پر ایک پیسہ بھی خرچ نہیں ہوا۔ ایم کیو ایم کے ارکان اسمبلی کا کہنا تھا کہ سندھ حکومت سے امیدیں ختم ہو چکی ہیں۔ پانی کے مسئلے پر خطوط وزیر اعلیٰ ، آئی جی سندھ اور ڈی جی رینجرز کو ارسال کیے ہیں اور نیب کو بھی بھیجیں گے۔ کراچی میں پانی پر فسادات ہوئے تو ذمہ دار سندھ حکومت اور وزیر اعلیٰ ہوں گے۔


Comments

FB Login Required - comments