ترک صدر طیب اردوان نے عہدے کا حلف اٹھالیا، داماد وزیر خزانہ مقرر


استنبول:رجب طیب اردوان نے تیسری مدت صدارت کے لیے عہدے کا حلف اٹھا لیا، جس کے ساتھ ہی ترکی میں وزیراعظم کا عہدہ ختم کرکے صدارتی نظام نافذ ہوگیا، جسے اپوزیشن کی جانب سے کڑی تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔

یاد رہے کہ 24 جون کو ترکی کی تاریخ میں پہلی مرتبہ ایک ساتھ ہونے والے صدارتی اور پارلیمانی انتخابات میں ترک صدر رجب طیب اردوان اور ان کی جماعت جسٹس اینڈ ڈویلپمنٹ پارٹی نے کامیابی حاصل کی تھی۔

عہدہ صدارت کا حلف اٹھاتے ہی طیب اردوان نے نئے نظام کے تحت پہلی کابینہ کا اعلان کرتے ہوئے اپنے داماد بیرات البیراک کو وزیر خزانہ و مالی امور مقرر کر دیا۔
40 سالہ نئے وزیر خزانہ اردوان کی سب سے بڑی بیٹی کے شوہر ہیں جو اس سے قبل وزیر توانائی بھی رہ چکے ہیں۔

اس خبر پر ترک کرنسی لیرا کی قدر میں 2.4 فیصد کمی واقع ہوئی۔
صدر طیب اردوان کے دست راست اور ایمر جنسی ایجنسیز کے سابق سربراہ فواد اوکتائے کو نائب صدر مقرر کیا گیا ہے جبکہ آرمی چیف جنرل حلوصی آقار کو وزیر دفاع کے طور پر مقرر کیا گیا ہے۔

مولود چاوش اوگلو نئی کابینہ میں بدستور وزیر خارجہ رہیں گے جبکہ عبدالمجید گل کو وزیر انصاف، سلیمان سوئیلو کو وزیر داخلہ اور ضیاء سلچوق کو وزیر تعلیم مقرر کیا گیا ہے۔

شہباز شریف کی ترک صدر کو مبارکباد
دوسری طرف مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف نے ترک صدر طیب اردوان کو عہدہ سنبھالنے پر مبارکباد دی۔
شہباز شریف کا کہنا تھا کہ انہیں صدر اردوان نے حلف برداری کی تقریب میں مدعو کیا تھا، لیکن وہ الیکشن مہم اور سابق وزیراعظم نواز شریف کی لندن سے وطن واپسی کی وجہ سے نہیں جا سکے۔

اپنے تہنیتی پیغام میں شہباز شریف نے مزید کہا کہ ترکی اور پاکستان ہمیشہ ایک دوسرے کے ساتھ کھڑے رہیں گے اور اپنے تعلقات کو مزید مستحکم کریں گے۔

بشکریہ جیو نیوز۔

image_pdfimage_print
Comments - User is solely responsible for his/her words


اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ ”ہم سب“ ایک مثبت سوچ کو فروغ دے کر ایک بہتر پاکستان کی تشکیل میں مدد دے رہا ہے تو ہمارا ساتھ دیں۔ سپورٹ کے لئے اس لنک پر کلک کریں