چھوٹی آنت کی بیماری کا پتہ چلانے کے لیے اب کیمرہ کیپسول کھلایا جائے گا


کیپسول کیمرہ

BBC
سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ طلسمی گولی یا کیپسول نما کیمرہ چھوٹی آنت کی بیماریوں کے بارے میں پتہ چلانے معاون ہوگا

سائنس کی روز افزوں ترقیات کے پیش نظر یہ کہا جا سکتا ہے کہ کوئی بھی بیماری اس کی پہنچ سے باہر نہیں رہے گی۔

ایک عرصے تک کئی جان لیوا اور مہلک سمجھی جانے والی بیماریوں پر اب قابو پا لیا گيا ہے۔

لیکن ہماری چھوٹی آنت میں اب بھی بہت سی بیماریاں پلتی ہیں جو ابھی تک سائنس کی گرفت میں نہیں آ سکی ہیں۔

انڈوسکوپی سے بھی صرف بڑی آنت یا معدے تک ہی پہنچا جا سکتا ہے۔

طلسمی دوا

اب تک چھوٹی آنت کی بیماریوں کی شناخت مشکل رہی ہے۔ لیکن اب ایک کیمرے کے وجود میں آنے سے یہ امید ظاہر کی جا رہی ہے کہ چھوٹی آنت میں پیدا ہونے والی اور پلنے بڑھنے والی بیماریوں کے بارے میں معلومات میں اضافہ ہوگا۔

چھوٹی آنت

BBC
چھوٹی آنت کی بیماریاں ابھی بھی ڈاکٹروں کی گرفت سے باہر ہیں

سائنسدانوں نے وائرلیس تکنیک کے استعمال کے ساتھ ایک دوا یا کیپسول تیار کیا ہے۔

اس کیپسول میں ایک چھوٹا سا کیمرہ نصب ہے جو معدے کی چھوٹی آنت کا حال بیان کرے گا۔ یہ مائکرو کیمرہ تصاویر اور ویڈیو دونوں بنا سکتا ہے۔

یہ بھی پڑھیے

ریو وائرس تھیراپی کے ذریعے کینسر کا علاج ممکن

آنتوں کے بیکٹریا کینسر کے علاج میں مددگار

اس کیمرے سے ایک روشن سفید روشنی نکلتی جو آنتوں کی بافت پر پڑتی ہے اور اس کے ذریعے چھوٹی آنت کے اندرون کو باہر کمرے میں لگے سکرین پر دیکھا جا سکتا ہے۔

یہ دوا پیٹ میں اصل حالت میں رہے گی

دوا

BBC
یہ پیٹ میں کیپسول کی کمپیوٹر سے بنائی گئی خیالی تصویر ہے

جس کیپسول میں یہ کیمرہ فٹ ہوگا اسے ایسی چیز سے تیار کیا گیا ہے جو کھانا ہضم کرنے کے لیے استعمال ہونے والے کیمیکل میں نہیں گلے گی۔ جانچ کے وقت مریض کے پیٹ پر ایک بیلٹ باندھی جائے گی جس میں ریڈیو سینسر اور ڈیٹا ریکارڈر نصب ہوگا۔

کیپسول کھانے کے بعد سکرین پر ہر سیکنڈ دو تصاویر آتی رہیں گی اور اگر اس میں ویڈیو آپشن کو آن کر دیا جائے تو وہاں کی لائیو فیڈ دیکھی جا سکتی ہے۔

یہ بھی پڑھیے

ایسپرن ‘ٹیومر’ سے بچاتی ہے

کھانا بنانے کی شوقین ایک بغیر پیٹ والی لڑکی!

مریض کے ہاضمے کے نظام سے یہ گولی دس سے 48 گھنٹے کے درمیان نکلتی ہے۔ 48 گھنٹے بعد مریض پھر سے ہسپتال آتا ہے جہاں تصاویر اور ویڈیو کی مدد سے کمپیوٹر سکرین پر چھوٹی آنت کی جانچ کی جاتی ہے اور کسی بیماری کے ہونے یا نہ ہونے کا پتہ لگایا جاتا ہے۔

یہ امید ظاہر کی جا رہی ہے کہ کیپسول جیسے اس کیمرے سے چھوٹی آنت میں کینسر کی موجودگی کا پتہ چل سکے گا۔

image_pdfimage_print

Comments - User is solely responsible for his/her words

اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ ”ہم سب“ ایک مثبت سوچ کو فروغ دے کر ایک بہتر پاکستان کی تشکیل میں مدد دے رہا ہے تو ہمارا ساتھ دیں۔ سپورٹ کے لئے اس لنک پر کلک کریں

بی بی سی

بی بی سی اور 'ہم سب' کے درمیان باہمی اشتراک کے معاہدے کے تحت بی بی سی کے مضامین 'ہم سب' پر شائع کیے جاتے ہیں۔

british-broadcasting-corp has 4498 posts and counting.See all posts by british-broadcasting-corp