لائیو شو میں خاتون کو تھپڑ مارنے والے عالم دین مفتی اعجاز ارشد قاسمی سٹوڈیو سے گرفتار


بھارت میں عالم دین نے لائیو ٹی وی پروگرام کے دوران ساتھ بیٹھی مسلمان خاتون کے ساتھ ایسی شرمناک حرکت کردی کہ فوری گرفتار کرلیا گیا

بھارت میں ایک ٹی وی پروگرام کے دوران مفتی اعجاز ارشد قاسمی کو خاتون وکیل فرح فیاض کو تھپڑ مارنے پر گرفتار کرلیا گیا ہے۔ لائیو ٹی وی پروگرام کے دوران تین طلاق کے معاملے پر بحث جاری تھی کہ اسی دوران خاتون وکیل نے عالم دین کو جانور قرار دیا جس کے بعد دونوں کھڑے ہوگئے اور بحث کرنے لگے ، اسی دوران خاتون نے مولانا کو تھپڑ جڑ دیا جس کے جواب میں اعجاز ارشد قاسمی نے بھی تھپڑوں کی بارش کردی۔

مفتی اعجاز ارشد قاسمی زی ہندوستان کے پروگرامز میں باقاعدگی کے ساتھ شرکت کرتے ہیں۔ منگل اور بدھ کی درمیانی شب بھی وہ اس ٹی وی پروگرام میں شریک تھے جس میں تین طلاق کا معاملہ زیر بحث لایا گیا تھا۔ پینل پر سپریم کورٹ کی سینئر وکیل فرح فیاض بھی موجود تھیں۔

ٹی وی پروگرام کے دوران خاتون وکیل نے کہا کہ قرآن پاک میں کہیں بھی تین طلاق کا ذکر نہیں ہے۔ اس بات پر معاملات بگڑنا شروع ہوئے اور دونوں طرف سے لفظی جنگ شروع ہوگئی۔ اسی جنگ کے دوران خاتون وکیل کی جانب سے مفتی اعجاز ارشد قاسمی کو جانور پکارنے کے عمل نے کسی بم کا کام کیا اور دونوں ہی کھڑے ہوگئے اور تو تکار کرنے لگے۔

اس سے پہلے کہ پروگرام کے دیگر شرکا یا چینل انتظامیہ دونوں تک پہنچ پاتی، خاتون نے لائیو شو کے دوران مفتی اعجاز کو تھپڑمار دیا جس کے جواب میں مولانا نے بھی خاتون پر تھپڑوں کی بارش کردی۔لائیو ٹی وی پروگرام کے دوران ہونے والے جھگڑے کے فوری بعد چینل انتظامیہ نے پولیس کو بلالیا جس نے سٹوڈیو سے ہی مفتی اعجاز ارشد قاسمی کو گرفتار کرلیا۔

image_pdfimage_print
Comments - User is solely responsible for his/her words


اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ ”ہم سب“ ایک مثبت سوچ کو فروغ دے کر ایک بہتر پاکستان کی تشکیل میں مدد دے رہا ہے تو ہمارا ساتھ دیں۔ سپورٹ کے لئے اس لنک پر کلک کریں