چیف جسٹس کا پاناما لیکس پر جوڈیشل کمیشن بنانے سے انکار


\"chiefچیف جسٹس آف پاکستان انور ظہیر جمالی نے پاناما لیکس پر جوڈیشل کمیشن بنانے سے انکار کر دیا۔ اس فیصلے کے حوالے سے رجسٹرار سپریم کورٹ نے سیکرٹری قانون کو بھی آگاہ کر دیا ہے۔ ذرائع کے مطابق تمام فریقین کا ٹی او آرز پر اتفاق اور مناسب قانون سازی تک کمیشن نہیں بنایا جاسکتا۔ ذرائع کے مطابق جب تک پاناما لیکس معاملے کی جانچ کیلئے مناسب قانون سازی نہیں کی جاتی اور دونوں فریقین کے درمیان ٹی او آرز طے نہیں ہوتے اس وقت تک جوڈیشل کمیشن قائم نہیں کیا جاسکتا۔ ٹی او آرز کے معاملے پر تاحال اپوزیشن اور حکومت کے درمیان ڈیڈ لاک قائم ہے ، اس سے قبل پاناما لیکس تنازعہ منظر عام پر آنے کے بعد حکومت اور اپوزیشن کے درمیان شدید اختلافات سامنے آئے اور اپوزیشن کی جانب سے وزیر اعظم کے استعفے کا مطالبہ کیا گیا جس پر وزیر اعظم نواز شریف نے واضح طور پر جواب دیا تھا کہ وہ کسی صورت مستعفی نہیں ہوں گے۔


Comments

'ہم سب' کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ کمنٹ کرنے والا فرد اپنے الفاظ کا مکمل طور پر ذمہ دار ہے اور اس کے کمنٹس کا 'ہم سب' کی انتظامیہ سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

اسی بارے میں: ۔  امریکہ سعودی عرب کو گائے کے طور پر استعمال کر رہا ہے: آیت اللہ خامنہ ای