افغان مہاجرین دہشت گردی میں استعمال ہوتے ہیں : ناصر جنجوعہ


nasar janjuaوزیر اعظم کے مشیر برائے قومی سلامتی لیفٹیننٹ جنرل ریٹائرڈ ناصر جنجوعہ کا کہنا ہے کہ طالبان نے افغان مہاجرین کو استعمال کیا کیونکہ افغان مہاجرین کی شکل میں طالبان کو پناہ گاہیں مل جاتی ہیں۔
اسلام آباد میں تقریب سے خطاب کے دوران وزیر اعظم کے مشیر برائے قومی سلامتی امور نے کہا کہ لوگ سمجھتے ہیں کہ ہم ڈبل گیم کھیل رہے ہیں جوغلط ہے، ہم امن پسند قوم ہیں اور افغانستان میں امن کی خواہش رکھتے ہیں، ہمارے دل افغانستان کے لیے دھڑکتے ہیں،ہم نے افغانیوں کے ساتھ اپنے گھر اور دسترخوان بانٹے ہیں،عالمی برادری تین ڈالر سالانہ فی مہاجر دے کر سمجھتی ہے کہ اس نے اپنا کام کر دیا، ہمیں افغان بھائیوں سے ہمدردی ہے لیکن ہمیں 30 لاکھ مہاجرین کے بدلے کچھ نہیں ملا، افغان مہاجرین کے بوجھ کے باعث ملکی معیشت کو100ارب کا خسارہ برداشت کرنا پڑا۔
لیفٹیننٹ جنرل ریٹائرڈ ناصر جنجوعہ نے کہا کہ طالبان نے افغان مہاجرین کو استعمال کیا، افغان مہاجرین کی شکل میں طالبان کو پناہ گاہیں مل جاتی ہیں، یہ لوگ خالی ہاتھ سرحد پار کرتے ہیں اور دوسری جانب جا کر لڑتے ہیں،واپسی پر وہ پھر شریف آدمی دکھائی دیتے ہیں، اس کے علاوہ مہاجرین منشیات سمگلنگ اور دہشت گردی میں استعمال ہوتے ہیں، اس کے لئے سرحدوں پر نگرانی کے نظام کو موثر بنانا ضرروی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اور افغانستان کے درمیان کچھ اختلافات موجود ہیں، باہمی مفادات کے حصول کے لیے مل کر آگے بڑھا جاسکتا ہے، خطے میں استحکام کے لیے عالمی برادری پاکستان اورافغانستان کی مدد کرے۔


Comments

FB Login Required - comments