شیخ زید لیڈی ڈاکٹر ریپ اٹیمپٹ کیس: پرنسپل اور ایم ایس کو معطل کر دیا گیا


سیکرٹری سپیشلائزڈ ہیلتھ کیئر اینڈ میڈیکل ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ نے شیخ زید ہسپتال رحیم یار خان میں رات کے تین بجے خاکروب کی جانب سے ایک لیڈی ڈاکٹر کا ریپ کرنے کی کوشش کے کیس میں کل انکوائری کمیٹی بنا کر اسے 24 گھنٹے میں رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیا تھا۔

آج سیکرٹری ہیلتھ نے شیخ زید ہسپتال کے پرنسپل ڈاکٹر مبارک علی اور میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر غلام ربانی کو معطل کر دیا ہے اور انہیں محکمے کو رپورٹ کرنے کا حکم دے دیا ہے۔

یاد رہے کہ شیخ زید کے ینگ ڈاکٹرز نے الزام لگایا ہے کہ پرنسپل نے بدنامی سے بچنے کی خاطر معاملے کو دبانے کی کوشش کی تھی اور وقوعے کو ای سی جی مشین کی چوری کے معالے کا رنگ دینے کی کوشش کی تھی۔

شیخ زید اسپتال میں نائٹ ڈیوٹی والی لیڈی ڈاکٹر سے زیادتی کی کوشش

لیڈی ڈاکٹر، نائٹ ڈیوٹی اور ریپ

image_pdfimage_print
Comments - User is solely responsible for his/her words


اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ ”ہم سب“ ایک مثبت سوچ کو فروغ دے کر ایک بہتر پاکستان کی تشکیل میں مدد دے رہا ہے تو ہمارا ساتھ دیں۔ سپورٹ کے لئے اس لنک پر کلک کریں

Comments are closed.