تازہ ترین: ایمان مزاری نے اپنی والدہ شیریں مزاری کے نجی پیغامات لیک کر دیے


وفاقی وزیر انسانی حقوق شریں مزاری اپنی بیٹی ایمان مزاری کی غیر سنجیدہ حرکتوں پر بھڑک اٹھیں۔ شریں مزاری نے اپنی بیٹی کو نجی پیغام دیتے ہوئے کہا کہ تم نے پاک فوج کے خلاف بیان دے کر مجھے شرمندہ کیا ہے۔ ایمان مزاری نے غصے کے عالم میں اپنی والدہ کا نجی پیغام سوشل میڈ یا پر شیئر کر کے واضح پیغام دیا ہے کہ وہ خاموش نہیں رہے گی ۔

ایمان مزاری نے مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنی والدہ کا نجی پیغام شیئر کردیا جس میں شریں مزاری کا کہنا تھا کہ تم پاگلوں کی طرح مسلسل فوج کے خلاف بیان دے رہی ہو ،اگر بھارتی آرمی چیف کوئی بیان دیتا ہے تو اس کا جواب ڈی جی آئی ایس پی آر کی جانب سے ہی جائے گا ۔انہوں نے اپنی بیٹی سے کہا کہ تم ایک بار پھرمیرے لیے شرمندگی کا باعث بن رہی ہو ،تمہیں پاک فوج کے خلاف نفرت انگیز بیان دینا بند کرنے کی ضرورت ہے ۔شریں مزاری نے ایمان مزاری کو کہا کہ تمہاری سمجھ داری ختم ہو گئی ہے اور اس سے تمہاری ساکھ بھی خراب ہو رہی ہے ،یہ سب صرف بے وقوفی اور میرے لیے باعث شرمندگی ہے ۔

اس پر جواب دیتے ہوئے ایمان مزاری نے کہا کہ میری آزادی کے لیے اماں کو بھاری قیمت ادا کرنا پڑ رہی ہے ،میں نے یہ پیغام اپنی والدہ کی مرضی کے بغیر شیئر کیا ہے کیونکہ انہیں ایسی مصیبت میں دیکھ کر جس پر ان کا کنٹرول نہیں مجھے دلی دکھ ہو رہا ہے لیکن میں خاموش نہیں رہوں گی کیونکہ یہ بد دیانتی ہو گی ،ہم اختلاف کرتے ہیں اس کو قبول کریں اور اس پر قابو پائیں ۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز بھارتی آرمی چیف نے پاک فوج کے خلاف بیان دیا تھا جس پر پاک فوج کے ترجمان نے بھارتی فوج کو بھرپور جواب دیا تھا لیکن اس حوالے سے ایمان مزاری نے کہا تھا کہ یہ بہتر ہو گا کہ ڈی جی آئی ایس پی آر اپنے الفاظ کا سوچ سمجھ کر استعمال کریں ، ہم سب پاکستانی فوج کی سیاست میں مداخلت سے بخوبی آگاہ ہیں ،ہماری سول لیڈر شپ بھارتی بوگس دھمکیوں کا جواب دیں ، ہمیں ضرورت نہیں ہے کہ ڈی جی آئی ایس پی آر بیان جاری کریں، جو کہ وہ ہمیشہ کرتے ہیں ، یہ افسوس کن ہے۔“

متنازع ٹویٹ کے بعد شیریں مزاری کی بیٹی ایمان کا ٹویٹر اکاؤنٹ غائب ہو گیا

image_pdfimage_print
Comments - User is solely responsible for his/her words


اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ ”ہم سب“ ایک مثبت سوچ کو فروغ دے کر ایک بہتر پاکستان کی تشکیل میں مدد دے رہا ہے تو ہمارا ساتھ دیں۔ سپورٹ کے لئے اس لنک پر کلک کریں