کیلاش کھیر نے تصویریں کھنچوانے کے دوران رانوں پہ ہاتھ پھیر کے مجھے ہراساں کیا


” میں کیلاش کھیر کا انٹرویو کرنے گئی تو انہوں نے میرے جسم کے اس مخصوص حصے پر ۔۔۔“ بالی ووڈ میں انتہائی شریف سمجھنے جانے والے گلوکار کیلاش کھیر پرخاتون صحافی نے انتہائی شرمناک ترین الزام لگ گیا

 

بالی ووڈ اداکارہ تنوشری دتہ کے بعدکنگنا رناوت میدان میں آئیں اور انہوں نے بھی اپنی فلم کوئن کے ڈائریکٹر پر جنسی ہراسانی کا الزام عائد کیا تاہم اب بھارتی میڈیا کی ایک خاتون صحافی نے انتہائی شریف سمجھے جانے والے گلوکار کیلاش کھیر کے کردار پر بھی سوالات اٹھا دیئے ہیں ۔

تفصیلات کے مطابق نتاشا ہمرجانی نے ” می ٹو “ میں اینٹری ماری اور دعویٰ کرتے ہوئے کہا کہ ” یہ 2006 کی بات ہے جب میں نئی نئی صحافت میں آئی اور ہندوستان ٹائمز میں فوٹو گرافر تعینات ہوئی تو مجھے کیلاش کھیر اور ماڈل زلفی سید نے مبینہ طور پر جنسی ہراسگی کا نشانہ بنایا ۔“

انہونے ایک اور ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ” مجھے میری ساتھی رپورٹر کے ساتھ کیلاش کھیر کا انٹرویو کرنے کیلئے ان کے گھر بھیج دیا گیا اور کہا گیا کہ ان کی تصویریں بھی لینی ہیں ۔ انٹرویو کے دوران یہ ’چھوٹا ‘ شخص ہمارے درمیان آ کر بیٹھ گیا اور جتنا زیادہ ہمارے قریب ہو سکتا تھا ہو گیا ، اس کے بعد اس نے اپنے ہاتھ ہماری سکرٹس تھائیز پر جہاں ختم ہو رہیں تھیں وہاں رکھ دیئے ۔“

image_pdfimage_print
Comments - User is solely responsible for his/her words


اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ ”ہم سب“ ایک مثبت سوچ کو فروغ دے کر ایک بہتر پاکستان کی تشکیل میں مدد دے رہا ہے تو ہمارا ساتھ دیں۔ سپورٹ کے لئے اس لنک پر کلک کریں