جب 15 سالہ بچے کی بوتل میں ویاگرا ڈال دی گئی


15 سالہ بچے کی بوتل میں اس کے دوستوں نے ویاگرا ڈال دی اور پھر۔۔۔

 

ایک برطانوی سکول سے کچھ بچے مطالعاتی دورے پر جرمنی گئے جہاں ایک طالب علم نے دوسرے کے ساتھ ایسا مذاق کر ڈالا کہ کوئی سوچ بھی نہ سکتا تھا۔ میل آن لائن کے مطابق ایٹونبری اکیڈمی کے 80 طلبہ کو ہولوکاسٹ اور سرد جنگ کے متعلق معلومات مہیا کرنے کے لیے جرمنی کے دارالحکومت برلن لیجایا گیا جہاں ایک 16سالہ طالب علم نے اپنے 15سالہ ساتھی کے مشروب میں جنسی قوت کی گولی ویاگرا ڈال دی۔ جیسے ہی اس طالب علم نے یہ مشروب پیا، اس کی حالت خراب ہو گئی جس پر اسے فوری طور پر ہسپتال پہنچایا گیا جہاں اسے طبی امداد دی گئی۔

رپورٹ کے مطابق ٹرپ کی واپسی پر سکول انتظامیہ نے معاملے کی تحقیقات کیں اور اس میں ملوث طالب علم کو دو دن کے لیے سکول سے نکال دیا۔ متاثرہ طالب علم کے والدہ کا کہنا ہے کہ ”سکول نے اس طالب علم کو انتہائی کم سزا دی ہے۔ اس کی حرکت کی وجہ سے میرے بچے کو زیادہ نقصان بھی پہنچ سکتا تھا اور اگر اسے دل یا دوران خون کا کوئی مسئلہ ہوتا تو اس کی موت بھی واقع ہو سکتی تھی۔میں نے سکول انتظامیہ کے سامنے جب اس پر احتجاج کیا تو انہوں نے کہا کہ میں ضرورت سے زیادہ ردعمل کا مظاہرہ کر رہا ہوں۔“ واضح رہے کہ برطانیہ میں کسی کے مشروب میں کوئی بھی چیز ڈالنا غیرقانونی ہے اور اس پر 10سال تک قید کی سزا ہو سکتی ہے۔

image_pdfimage_print
Comments - User is solely responsible for his/her words


اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ ”ہم سب“ ایک مثبت سوچ کو فروغ دے کر ایک بہتر پاکستان کی تشکیل میں مدد دے رہا ہے تو ہمارا ساتھ دیں۔ سپورٹ کے لئے اس لنک پر کلک کریں