نامعلوم افراد کی فائرنگ سے معروف قوال امجد فرید صابری جاں بحق


\"amjadپولیس ذرائع کے مطابق امجد صابری کراچی کے علاقے لیاقت آباد سے گزر رہے کہ اچانک موٹر سائیکل پر سوار دو حملہ آوروں نے ان کی گاڑی پر فائرنگ کر دی جس سے وہ اور گاڑی میں موجود ایک اور شخص شدید زخمی ہو گیا۔ دہشت گردوں نے ان کی گاڑی پر متعدد گولیاں چلائیں۔ عینی شاہدین کے مطابق ایک موٹر سائیکل پر دو مسلح دہشت گرد سوار تھے۔ گاڑی آہستہ ہونے پر موٹر سائیکل پر پچھلی نشست پر بیٹھے دہشت گرد نے گاڑی کے فرنٹ پر فائرنگ کی۔ دہشت گردوں نے اطمینان سے کارروائی کی اور موقع سے فرار ہونے میں کامیاب ہو گئے۔ ایس ایس پی سینٹرل مقدس حیدر کا کہنا ہے کہ دہشت گرد امجد صابری کا پیچھا کر رہے تھے موقع پا کر ٹارگٹ کیا۔ امجد صابری کو چار سے پانچ گولیاں لگیں۔ جائے وقوعہ سے گولیوں کے خول جمع کئے جا رہے ہیں۔ تفصیلات جمع کی جا رہی ہیں۔ ابھی حتمی کچھ کہنا قبل ازوقت ہوگا۔ واقعے کی اطلاع ملتے ہی پولیس اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکار فوری طور پر موقع پر پہنچے اور ایمبولینس کے ذریعے زخمیوں کو عباسی شہید ہسپتال منتقل کیا۔ ہسپتال ذرائع کے مطابق امجد صابری کو منہ اور سینے پر گولیاں لگیں۔ امجد صابری زخموں کی تاب نہ لاسکے اور خالق حقیقی سے جا ملے۔ ان کے ہمراہ زخمی شخص کو بچانے کی سر توڑ کوششیں کی جا رہی ہیں۔ اطلاعات کے مطابق امجد صابری ایک نجی ٹی وی کے پروگرام کی ریکارڈنگ کیلئے جا رہے تھے۔ وزیراعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ نے امجد فرید صابری کے قتل کا نوٹس لیتے ہوئے آئی جی سے رپورٹ طلب کر لی ہے۔ انہوں نے پولیس حکام کو حکم دیا ہے کہ معروف پاکستانی قوال کے قاتلوں کو فوری طور پر گرفتار کیا جائے۔ واضح رہے کہ امجد صابری معروف قوال غلام فرید صابری کے فرزند تھے۔ قوال امجد صابری 23 دسمبر 1976ءکو پیدا ہوئے۔ امجد صابری نے 9 سال کی عمر میں موسیقی سیکھنے کا آغاز کیا۔ امجد صابری کو قوالی کا گر وراثت میں ملا تھا۔

اسی بارے میں: ۔  ’نواز شریف استعفیٰ نہیں دیں گے، عدالت کا حکم مانیں گے‘

Comments

'ہم سب' کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ کمنٹ کرنے والا فرد اپنے الفاظ کا مکمل طور پر ذمہ دار ہے اور اس کے کمنٹس کا 'ہم سب' کی انتظامیہ سے کوئی تعلق نہیں ہے۔