فیاض الحسن چوہان کی تقریر کے دوران طلبا کا سخت احتجاج: تقریب بدمزگی کا شکار ہو گئی


 

 صوبائی وزیر اطلاعات فیاض الحسن چوہان کو نواز شریف پر تنقید مہنگی پڑی گئی۔ طلبا نے شیم شیم کے نعرے لگا دیے ۔ تفصیل کے مطابق لاہور کے ٹاون ہال میں یوتھ پارلیمنٹ کے اجلاس کے دوران فیاض الحسن چوہان نے مخالفین پر جارحانہ انداز اپنایا تو نوجوان لیگی قائدین پر تنقید برداشت نہ کر پائے اور صوبائی وزیر کی تقریر کے دوران شیم شیم کے نعرے لگانے لگے۔

اس موقع پر فیاض الحسن چوہان نے کہا کہ ن لیگ کی جانب سے طے شدہ منصوبے کے تحت احتساب عدالت کے باہر صورت حال خراب کی گئی۔ ان کی کوشش ہے کہ ماڈل ٹاون جیسا کام ہو جائے تاکہ اسے دکھا کر حکومت کو ظالم ثابت کیا جا سکے لیکن ہم ایسا کچھ نہیں ہونے دیں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ جے آئی ٹی آل شریف کی چھیڑ بن چکی ہے۔ اب انہیں ماڈل ٹاؤن کیس میں پھانسی کا پھندا نظر آ رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ اب تک کرپشن اور بددیانتی کا سلسلہ چل رہا تھا اور ان کی جانب سے خود کو مظلوم بن اکر پیش کرنے کی منصوبہ بندی کی گئی۔

تقریب میں اس وقت سخت بدمزگی پیدا ہوگئی جب تقریب کے شرکا میں کچھ نوجوانوں نے کھڑے ہوکر شریف فیملی کی حکومت بہترین حکومت قرار دینا شروع کردیا۔ نوجوانوں نے کہا کہ موجودہ حکومت سے سابق وزیراعظم نوازشریف کی حکومت بہتر تھی۔ نوازشریف حکومت کی تعریف کرنے پر فیاض الحسن چوہان مزید آگ بگولہ ہوگئے اور تقریب کا ماحول درہم برہم ہو گیا۔ اس موقع پر صوبائی وزیر سے بدتمیزی کے مناظر بھی دیکھنے میں آئے

image_pdfimage_print
Comments - User is solely responsible for his/her words


اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ ”ہم سب“ ایک مثبت سوچ کو فروغ دے کر ایک بہتر پاکستان کی تشکیل میں مدد دے رہا ہے تو ہمارا ساتھ دیں۔ سپورٹ کے لئے اس لنک پر کلک کریں