نئے گیس کنکشنز پر پابندی کے خاتمے کا امکان


gasسینٹ کی قائمہ کمیٹی برائے پیٹرولیم کو بتایا گیا ہے کہ نئی سکیموں پر عائد گیس کنکشن کی پابندی کو عنقریب اٹھایا جاسکتا ہے اور اس حوالے سے ایک سمری کونسل آف کامن انٹرسٹ (سی سی آئی) کو بھیجی جاچکی ہے۔
پارلیمنٹ ہاو¿س میں ہونے والے اجلاس کی صدارت سینیٹر میر اسرار اللہ خان زہری کررہے تھے، جنھوں نے سیکریٹری پیٹرولیم کی غیر حاضر کے باوجود اجلاس کے آغاز میں اراکین کو طے شدہ ایجنڈے پر بحث جاری رکھنے کے لیے قائل کیا۔کمیٹی کے اراکین نے ملک بھر کی نئی رہائشی سکیموں کو نئے گیس کنکشن کی فراہمی میں تاخیر پر شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔
وزارت پیٹرولیم کے حکام کا کہنا تھا کہ پابندی وزیراعظم کی جانب سے لگائی گئی تھی جس کے بعد گیس فراہم کرنے والی دونوں کمپنیوں نے کسی بھی نئے منصوبے کا آغاز نہیں کیا۔یہ فیصلہ گیس کی کمی کو مد نظر رکھتے ہوئے کیا گیا تھا اور اس حوالے سے ایک سمری سی سی آئی کو بھیجی گئی تھی۔حکام کا کہنا تھا کہ 5 ارب 60 کروڑ روپے مالیت کی نئی سکیموں کے حوالے سے سمری سی سی آئی کو بھیجی گئی تھی اور اس میں مولانا فضل الرحمن کی جانب سے بھیجے گئے منصوبے بھی شامل تھے۔
سینیٹر محسن عزیز نے مذکورہ مسئلے پر حکومتی جواب پر عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وہ یہ ا±مید کھو چکے ہیں کہ سمری سے مثبت نتائج سامنے آئیں گے۔انھوں نے کہا کہ ‘کوئی نہیں جانتا کہ سی سی آئی کا آئندہ اجلاس کب منعقد ہوگا’ جبکہ ‘اجلاس ہر 3 ماہ بعد ہونا چاہیے لیکن گذشتہ ایک سال میں ایک بھی اجلاس نہیں ہوا’۔اجلاس میں تیل پیدا کرنے والے اضلاع کے مقامی افراد کی ملازمتوں کی حیثیت پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔


Comments

FB Login Required - comments