بنی گالہ :عندلیب عباس ، ولید اقبال کی گرفتاری کے بعد رہائی


\"waleed-iqbal\"

پولیس اور پی ٹی آئی کارکنوں میں گمسان کا رن ، کورنگ روڈ میدان جنگ بن گیا ، پولیس کی جانب سے شیلنگ ، فائرنگ اور لاٹھی چارج کا استعمال

بنی گالہ (دنیا نیوز ) بنی گالہ کے باہر پھر ایکشن ہی ایکشن ، کورنگ روڈ میدان جنگ بن گیا ۔ پولیس اور تحریک انصاف کے کارکنوں کے درمیان گھمسان کا رن پڑا ۔ پولیس کی جانب سے فائرنگ اور شدید شیلنگ کی گئی ، جھڑپوں کے دوران تحریک انصاف کی رہنما عند لیب عباس اور علامہ اقبال کے بیٹے ولید اقبال کو پہلے گرفتار کیا پھر چھوڑ دیا گیا ۔ بنی گالہ کے باہر پھر ایکشن ہی ایکشن ، کورنگ روڈ میدان جنگ بن گیا ، پولیس کی شیلنگ ، ہوائی فائرنگ اور لاٹھی چارج سے تنائو بڑھ گیا ۔ تحریک انصاف کے کارکن کورنگ روڑ پہنچے تو پولیس بھی وہاں پہلے سے ہی موجود تھی ۔ کھلاڑیوں نے آگے جانے کی کوشش کی تو گھمسان کا رن پڑ گیا ۔ پولیس نے کارکنوں پر شیلنگ اور ہوائی فائرنگ کی ، لاٹھیاں بھی برسائیں ۔ پولیس کے تشدد کی وجہ سے کوئی ادھر بھاگا ، تو کوئی ادھر ، کوئی پہاڑوں اور جھاڑیوں میں چھپ گیا ۔ پولیس نے بھاگنے والے کارکنوں کا پیچھا نہ چھوڑا ۔ شیلنگ کی وجہ سے خاتون پولیس اہلکار بھی متاثر ہوئی ، پولیس نے تحریک انصاف کی رہنما عندلیب عباس اور علامہ اقبال کے پوتے ولید اقبال کو گرفتار کیا اور پھر چھوڑ دیا ۔ عندلیب عباس نے الزام لگایا کہ پولیس نے انہیں بالوں سے کھینچا اور زبردستی وین میں ڈالا ۔ گذشتہ روز بھی تحریک انصاف کے رہنما عارف علوی اور عمران اسماعیل کو پولیس نے پہلے گرفتار کیا اور پھر انہیں رہا کر دیا ۔ بنی گالہ کے باہر خواتین پولیس اہلکاروں اور پی ٹی آئی کی خواتین کارکنوں کے درمیان کھینچا تانی بھی ہوئی ، خواتین رہنماؤں کو حراست میں بھی لیا گیا لیکن بعد میں انہیں چھوڑ دیا گیا ۔

اسی بارے میں: ۔  کوہاٹ میں وزیراعظم کے جلسہ گاہ کے باہر پی ٹی آئی اور (ن) لیگی کارکنوں میں تصادم

Comments

'ہم سب' کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ کمنٹ کرنے والا فرد اپنے الفاظ کا مکمل طور پر ذمہ دار ہے اور اس کے کمنٹس کا 'ہم سب' کی انتظامیہ سے کوئی تعلق نہیں ہے۔