لاہور میں ینگ ڈاکٹرز کا احتجاج،علاج نہ ہونے پر بچی جاں بحق


\"strike\"

لاہور: لاہور میں ینگ ڈاکٹرز کے احتجاج نے شہریوں اور مریضوں کو شدید مشکلات سے دوچار کیا ہوا ہے جب کہ ینگ ڈاکٹرز کے احتجاج کے باعث علاج نہ ہونے پر ڈیڑھ سالہ بچی جاں بحق ہوگئی۔

لاہور میں مال روڈ پر 3 روز سے جاری ینگ ڈاکٹرزکے احتجاج نے شہری کو شدید مشکلات میں ڈال دیا ہے، سڑکوں پر احتجاج اور دھرنے سے ٹریفک کا نظام درہم برہم ہوگیا ہے۔ چند روز قبل ڈاکٹرز کی برطرفی کے خلاف ینگ ڈاکٹروں نے کام چھوڑ کر لاہور کے مال روڈ پر دھرنا دے دیا جس کے باعث اسپتالوں کا نظام درہم برہم ہوگیا جب کہ آج میوہسپتال میں ڈیڑھ سال کی بچی  ثنا ڈاکٹر نہ ہونے کی وجہ سے دم توڑ گئی، بچی کے باپ کے مطابق اس نے جب ڈاکٹروں سے علاج کا کہا تو ڈاکٹروں نے صاف انکار کرتے ہوئے مال روڈ پر جانے کاکہہ دیا۔

محکمہ صحت نے ینگ ڈاکٹروں کی بدمعاشی روکنے کیلئے بارہ ڈاکٹروں کی تنخواہ بھی کاٹی لیکن پھر بھی ڈاکٹروں کے کانوں پر جوں تک نہ رینگی۔ دوسری جانب دھرنا دینے والے ڈاکٹروں کاکہنا ہے کہ میواسپتال کے ڈاکٹروں کوناجائز برطرف کیاگیا ہے لہذا ان کوفوری بحال کیاجائے۔

image_pdfimage_print

Comments - User is solely responsible for his/her words

اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ ”ہم سب“ ایک مثبت سوچ کو فروغ دے کر ایک بہتر پاکستان کی تشکیل میں مدد دے رہا ہے تو ہمارا ساتھ دیں۔ سپورٹ کے لئے اس لنک پر کلک کریں