ہم نے سرجیکل سٹرائیک کی تو بھارت نصاب میں پاک فوج کے قصے پڑھائے گا:آرمی چیف


\"g-raheel-nawaz-sharif\"

پشاور ( بیورو رپورٹ +نوائے وقت رپورٹ ) آرمی چیف جنرل راحیل شریف نے بھارت کی جانب سے سرجیکل سٹرائیکس کے دعوی کو ’’جھوٹا ڈرامہ‘‘ قرار دیتے ہوئے خبردار کیا ہے کہ اگر ہم نے سرجیکل سٹرائیک کی تو ایسا جواب دینگے ہم نے سرجیکل سٹرائیک کی تو بھارتی نصاب میں اپنی آئندہ نسلوں کو پاک فوج کے قصے پڑھائے جائیں گے، پاک فوج کے جوان بھارتی فوج کو سبق سکھا سکتے ہیں، دہشت گردی کے خلاف لڑنے والی پاک آرمی دنیا کی مضبوط ترین فوج ہے، جس نے دہشت گردی کا ناسور ہمیشہ کے لیے دفن کردیا، فاٹا میں دہشت گردی کے خاتمے میں فوج اور ایف سی نے نمایاں کام انجام دیا، دہشتگردوں کے ٹھکانوں اور انفراسٹرکچر کو کامیابی سے ختم کردیا گیا، عوام کے تعاون سے دہشت گردی کو ختم کرنے میں مدد ملی، انسداد دہشت گردی کے آپریشنز کو مکمل کر کے دم لیں گے، پاک فوج اور قبائلیوں کا اتحاد ناقابل شکست بن چکا ہے، میرا جینا اور مرنا ملک کے لیے ہے، ریٹائرمنٹ کے بعد اپنی زندگی شہدا کے لواحقین کے لیے وقف کردوں گا۔ آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی چیف جنرل راحیل شریف نے فاٹا اور پشاور کا الوداعی دورہ کیا۔ آرمی چیف نے وانا میں پاک فوج اور ایف سی کے افسروں اورجوانوں سے خطاب کیا۔آرمی چیف نے کہاکہ فاٹامیں دہشت گردی کے خاتمے میں فوج اورایف سی نے نمایاں کام انجام دیا ہے ،دہشتگردوں کے ٹھکانوں اور انفراسٹرکچر کو کامیابی سے ختم کردیا گیا ہے ۔الحمدللہ قوم کی مدد سے ہم نے انسداد دہشتگردی آپریشنز کو منفرد اور جامع انداز میں مکمل کرلیا ہے ۔ مربوط اقدامات سے متاثرہ علاقوںمیں آبادکاری اور استحکام میں مدد ملی ہے ۔بعد میں آرمی چیف نے خیبر ایجنسی کا بھی دورہ کیا جہاں انھوںنے قبائلی عمائدین سے ملاقاتیں کیں اور باڑ ہ میں جرگے سے خطاب بھی کیا۔ آرمی چیف نے علاقے کو دہشتگردوں سے پاک کرنے کیلئے پاک فوج کی حمایت کرنے پر قبائلی عمائدین کا شکریہ ادا کیا اور قبائلی عوام کی بہادری اور جرات کی تعریف کی۔آرمی چیف نے کہاکہ پاک فوج اور قبائلیوں کا اتحاد ناقابل شکست بن چکا ہے۔ عوام کے تعاون سے دہشت گردی کو ختم کرنے میں مدد ملی،انسداد دہشت گردی کے آپریشنز کو مکمل کر کے دم لیں گے،دہشت گردی کے خلاف جنگ مل کر لڑی اور جیتی ہے۔آرمی چیف نے باڑہ میں شاہد آفریدی اسٹیڈیمکا سنگ بنیاد بھی رکھا جسے آرمی انجینئر تعمیر کریں گئے۔قبائلی عمائدین نے باوقار طریقے سے واپسی اور پورے فاٹا میں معیاری تعمیر ونو کیلئے پاک فوج کی اضافی کوششوں پر جنرل راحیل شریف کا شکریہ ادا کیا۔خیبر ایجنسی کی تحصیل باڑا میں شاہد خان آفریدی کے نام پر کرکٹ سٹیڈیم کے افتتاح کے بعد آرمی چیف کا قبائلی عمائدین سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ اگر ہم نے سرجیکل اسٹرائیک کی تو بھارتی نصاب میں پاک فوج کے قصے پڑھائے جائیں گے،پاک فوج کے جوان بھارتی فوج کوسبق سکھا سکتے ہیں۔ دہشت گردی کے خلاف لڑنے والی پاک آرمی دنیا کی مضبوط ترین فوج ہے، جس نے دہشت گردی کا ناسور ہمیشہ کے لیے دفن کردیا۔جنرل راحیل شریف نے کہا کہ انھوں نے اپنے دور میں پاک فوج کا مورال بلند کیا اور وہ چاہتے ہیں کہ فوج اور عوام کے درمیان رشتہ برقرار رہے۔اپنی ریٹائرمنٹ کے حوالے سے بات کرتے ہوئے جنرل راحیل شریف نے کہا کہ \’میں پاک آرمی کو خدا حافظ کہہ رہاہوں اور 29 نومبر کو اختیارات سونپ دوں گا۔مستقبل کے حوالے سے بات کرتے ہوئے آرمی چیف نے کہا کہ \’میرا جینا اور مرنا ملک کے لیے ہے، ریٹائرمنٹ کے بعد میں اپنی زندگی شہدا کے لواحقین کے لیے وقف کردوں گا۔اس سے قبل وانا پہنچنے پر آرمی چیف جنرل راحیل شریف کا لیفٹیننٹ جنرل ہدایت الرحمان نے استقبال کیا اور فاٹا کے دورے کے دوران انکے ہمراہ رہے۔ جنرل راحیل شریف نے کہا کہ پاک فوج اور قبائل نے دہشت گردی کے ناسور کو ختم کر دیا۔ آرمی چیف کا کہنا تھا کہ وہ 29نومبر کو اختیارات سونپ دیں گے۔ ریٹائرمنٹ کے بعد اپنی زندگی شہداء کے لواحقین کے لئے وقف کرتا ہوں۔ دہشت گردی کے خلاف لڑنے والی پاک فوج دنیا کی مضبوط ترین فوج ہے۔پاک فوج کو خدا حافظ کہہ رہا ہوں، پاک فوج کے جوان بھارتی فوج کو سبق سکھا سکتے ہیں، بھارتی فوج نے سرجیکل سٹرائیکس کا جھوٹا ڈرامہ رچایا، بھارت نے سرجیکل سٹرائیکس کی تو ایسا جواب دینگے کہ بھارتی نصاب میں پاک فوج کے قصے پڑھائے جائیں گے۔آرمی چیف نے قومی کرکٹر شاہد آفریدی کے ساتھ خیبر سٹیڈیم کا افتتاح کیا، اس موقع پر شاہد آفریدی نے کہا کہ آرمی چیف کے ساتھ خیبر اسٹیڈیم کا افتتاح کرنا اعزاز کی بات ہے۔ شاہد آفریدی نے جنرل راحیل شریف کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ ہمارے قومی ہیرو ہیں، میری نیک خواہشاب آپ کے ساتھ ہیں، آپ نے جو پاکستان کیلئے کیا اس پر وہ شکر گزار ہیں۔صباح نیوز کے مطابق جنرل راحیل شریف نے کہا کہ ہم نے سرجیکل سٹرائیک کی بھارت کو سرجیکل سٹرائیک کا پتہ ہی نہیں ۔ پاک فوج کا مورال بلند ہے، قبائلی عمائدین سے خطاب کرتے ہوئے آرمی چیف جنرل راحیل شریف نے کہا پاک فوج دنیا کی عظیم فوج ہے، میں جارہا ہوں اور 29 نومبر کو اختیارات سونپ دوں گا، اب نئے لوگ آئیں گے اور یہ سلسلہ یوں ہی چلتا رہے گا لیکن میرا جینا میرا مرنا ملک کے لئے ہے۔ ریٹائرمنٹ کے بعد اپنی زندگی شہدا کے لواحقین کیلئے وقف کرتاہوں شہدا کے لواحقین کیلئے فاونڈیشن بنائوں گا، ضرب عضـب آپریشن کی وجہ سے قبائلی علاقوں میں امن قائم ہوگیا ہے اور ترقیاتی کام بھی جاری ہیں، شاہد آفریدی سپورٹس کمپلیکس بن گیا تو یہاں آکر شاہد آفریدی سے میچ کھیلوں گا۔ شاہد آفریدی قوم کا فخر ہے۔ قبائلی عوام سے مل کر ہمیشہ خوشی ہوئی۔ عوام اور فوج کے درمیان رشتے کو برقرار رکھنا چاہتے ہیں۔ اس موقع پر شاہد آفریدی، کور کمانڈر پشاور لیفٹیننٹ جنرل ہدایت الرحمن اور آئی جی ایف سی میجر جنرل شاہین مظہر محمود ان کیساتھ تھے۔ جنرل راحیل شریف افتتاحی تقریب کے بعد شرکا ء کے ساتھ گھل مل گئے۔ قبائلی عمائدین نے آرمی چیف کے ساتھ سیلفیاں بھی بنائیں۔اس موقع پر آرمی چیف بڑے خوشگوار موڈ میں تھے ،قبائلی عمائدین نے آرمی چیف کو لونگی اور کلاہ پہنایا اس موقع پر آرمی چیف کا کہنا تھا کہ میرے لئے باعث فخر ہے میں انہیں اپنے گھر میں محفوظ جگہ پر رکھوں گا، قبائلی عمائدین نے دہشت گردی میں جو قربانیاں دی ہیں وہ قابل ستائش ہیں۔شا ہد آفریدی نے اپنے ٹوئٹر پیغام میں کہاہے کہ جنرل راحیل شریف میرے اور پاکستان کے ہیرو ہیں ،حمایت کرنے پر جنرل راحیل شریف کا تہہ دل سے شکریہ ادا کرتا ہوں،قومی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان نے آرمی چیف کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کرتے ہوئے پاکستان زندہ باد کا نعرہ بھی لگایا۔شاہد آفریدی خیبرایجنسی میں کرکٹ اسٹیڈیم کا افتتاح آرمی چیف جنرل راحیل شریف کی ریٹائرمنٹ سے قبل آخری مصروفیات میں سے ایک ہے۔آرمی چیف راحیل شریف نے فاٹا اور پشاور کا الوداعی دورہ بھی کیا۔ آرمی چیف وانا میں افسروں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ قومی کی حمایت سے انسداد دہشت گردی آپریشن کا دور مکمل کر لیا ہے۔ ہم نے منفرد اور جامع انداز میں آپریشن مکمل کیا۔ انسداد دہشتگردی کے آپریشنز مکمل کر کے دم لیں گے۔ عوام کے تعاون سے ختم کرنے میں مدد ملی ہے دہشتگردی کی جنگ مل کر لڑی اور جیتی ہے۔ اب بھی مل کر اور استحکام سے حاصل کامیابیوں کو مضبوط کریں گے۔آرمی چیف نے دہشت گردی کیخلاف آپریشن میں تعاون پر قبائلی عوام کا شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے قبائلی عوام کی بہادری اور جرأت کی تعریف کی۔این این آئی کے مطابق جنرل راحیل شریف نے کہا ہے کہ قوم کی حمایت سے انسداد دہشتگردی آپریشنز کا سلسلہ مکمل ہو چکا ہے ، سٹیبلائزیشن آپریشن اور عارضی بے گھر افراد کی دوبارہ آبادکاری کے مرحلے سے ہمیں اپنی کامیابیوں کو مستحکم کرنے میں مدد مل رہی ہے،قبائل عوام اور ہم نے دہشتگردی کا کئی برس مل کر مقابلہ کیااور ایک اٹوٹ رشتے میں منسلک ہو چکے ہیں ۔ وانا میں آرمی چیف نے پاک فوج اور فرنٹیئر کور کے افسروں اور جوانوں سے خطاب کیا ۔ آرمی چیف نے دہشتگردوں کو فاٹا کی پناہ گاہوں سے کامیابی سے نکالنے اور انکا انفراسٹرکچر ختم کرنے پر آرمی اور فرنٹیئر کور کو خراج تحسین پیش کیا۔ بعد ازاں پاک فوج کے سربراہ نے خیبر ایجنسی کا دورہ کیا اور باڑہ میں جرگہ کا انعقاد کیا ۔ انہوں نے اپنے علاقوں کو دہشتگردوں سے پاک کرنے کیلئے آرمی کی مکمل حمایت پر قبائلی عمائدین کا شکریہ ادا کیا۔ ہم نے دہشتگردی کا کئی برس تک مل کر مقابلہ کیا ہے اور اس کے نتیجہ میں ہم ایک نہ ٹوٹنے والے رشتے میں منسلک ہو چکے ہیں ۔
آرمی چیف
اسلام آباد( نمائندہ خصوصی نوائے وقت رپورٹ+ ) وزیراعظم نوازشریف نے آرمی چیف جنرل راحیل شریف کے اعزاز میں الوداعی عشائیہ دیا الوداعی عشائیے میں شرکت کیلئے آرمی چیف جنرل راحیل شریف وزیراعظم ہاؤس پہنچے جہاں وزیراعظم نے ان کا پرتپاک استقبال کیا، وزیراعظم نے آرمی چیف سے مصافحہ کیا جس کے بعد وزیراعظم اور آرمی چیف کے درمیان 12 منٹ تک ون آن ون ملاقات بھی ہوئی جس میں وزیر اعظم محمد نواز شریف نے دہشتگردی کے خلاف جنگ میںآرمی چیف اور پاک فوج کے کردار کو سراہا۔ وزیراعظم الوداعی عشایئے میں لیفٹیننٹ جنرل زبیر محمود حیات، لیفٹیننٹ جنرل اشفاق ندیم، لیفٹیننٹ جنرل قمر جاوید باجوہ اور لیفٹیننٹ جنرل جاوید اقبال رمدے، ایئر چیف مارشل سہیل امان ٗنیول چیف ایڈمرل ذکاء اللہ اور ڈائریکٹر جنرل آئی ایس آئی لیفٹیننٹ جنرل رضوان اختر سمیت دیگر اعلیٰ فوجی حکام بھی تقریب میں موجود تھے حکومتی شخصیات میں وزیردفاع خواجہ آصف، وزیرخزانہ اسحاق ڈار، وزیردفاعی پیداوار رانا تنویر، مشیر خارجہ سرتاج عزیز، وزیراعظم کے معاون خصوصی طارق فاطمی، سیکریٹری خارجہ اعزاز چوہدری ٗ مشاہد حسین سید سمیت شیخ روحیل اصغر بھی شریک ہوئے۔ وزیراعظم نوازشریف نے لیفٹیننٹ جنرل زبیر حیات، لیفٹیننٹ جنرل جاوید اقبال رمدے، لیفٹیننٹ جنرل قمر جاوید باجوہ اور لیفٹیننٹ جنرل اشفاق ندیم سے خوشگوار ماحول میں گفتگو کی ٗ آرمی چیف نے وزیر دفاع خواجہ آصف، مشیر خارجہ سرتاج عزیز، وزیر مملکت رانا تنویر اور وزیراعظم کے معاون خصوصی طارق فاطمی سمیت دیگر سے مصافحہ کیا ٗجنرل راحیل شریف نے مسلح افواج کے سربراہوں سے بھی مصافحہ کیا۔ تقریب کے دوران وزیراعظم نے تینوں سروسز چیفس کے ساتھ گروپ فوٹو بنوایا۔ الوداعی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نواز شریف نے کہا کہ تقریب کا مقصد آرمی چیف راحیل شریف کی شاندار خدمات پر خراج تحسین پیش کرنا ہے ٗراحیل شریف نے بطورآرمی چیف شاندارخدمات انجام دیں۔ جنرل راحیل کا خاندان ملکی دفاعی خدمات کے نام سے جانا جاتا ہے۔ جنرل راحیل شریف کو غیر معمولی قابلیت کی بنا پر آرمی چیف مقرر کیا گیا اور راحیل شریف نے محنت اور لگن سے خود کو بے مثال سپہ سالار ثابت کیا۔ انہوں نے کہاکہ جنرل راحیل شریف کی زیر قیادت فوج نے دہشت گردوں کو ہر محاذ پر شکست دی۔ بہترین سپہ سالار کے اسٹریٹجک مشوروں کو ہمیشہ اپنایا اور مستقبل میں بھی ان سے مشاورت کرتے رہیں گے -انہوں نے کہا کہ میں آپ کی حمایت اور تائید کا دلی طورپر شکر گزار ہوں ۔جنرل راحیل شریف نے وزیراعظم نوازشریف کوشاندارالفاظ میں خراج تحسین پرشکریہ اداکیا،وزیراعظم کے خطاب کے اختتام کے ساتھ ہی تالیوں ہال گونج اٹھا،تمام شرکاء نے کھڑے ہوکر آرمی چیف کو خراج تحسین پیش کیا۔ وزیراعظم نے کہا کہ جنرل راحیل کی زیر قیادت فوج نے دہشتگردوں کو ہر محاذ پر شکست دی ہے۔ وزیراعظم نے کہا کہ مادر وطن کی حفاظت کیلئے پاک فوج کی قربانیوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں۔ جنرل راحیل شریف کا خاندان ملکی دفاع کی خدمات کیلئے جانا جاتا ہے۔ انہوں نے مادر وطن کے دفاع کیلئے اپنے بڑوں کی روایات کو پروان چڑھایا ۔ جنرل راحیل شریف نے فوج میں خدمات کے دوران پیشہ ورانہ مہارت کا مظاہرہ کیا۔ جنرل راحیل شریف کو غیرمعمولی قابلیت کی بنیاد پر آرمی چیف مقرر کیا گیا تھا۔ انہوں نے محنت اور لگن سے خود کو بہترین سپہ سالار ثابت کیا۔ جنرل راحیل شریف نے بطور آرمی چیف ملک کیلئے شاندار خدمات انجام دیں۔ مسلح افواج کے آپریشن ضرب عضب کی پوری دنیا معترف ہے۔ انسداد دہشتگردی کیلئے ہمارے عزم سے دنیا واقف ہے۔ میں نے ہمیشہ جنرل راحیل شریف کے سٹرٹیجک مشوروں کو اپنایا ہے۔ جنرل راحیل شریف میں بھرپور قائدانہ صلاحیتیں ہیں ان کی انتھک کوششوں کے عزم کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں۔ مستقبل میں بھی جنرل راحیل شریف سے مشاورت جاری رکھوں گا۔ وزیراعظم نے الوداعی عشائیہ میں آرمی چیف جنرل راحیل شریف کی خدمات کو زبردست خراج تحسین پیش کیا تو ہال تالیوں سے گونج اٹھا۔ جنرل راحیل شریف نے شاندار الفاظ میں خراج تحسین پیش کرنے پر شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ بھرپور حمایت، تائید اور شاندار الفاظ پر وزیراعظم کا دلی طور پر شکرگزار ہوں۔ آئی این پی کے مطابق وزیراعظم نوازشریف اور آرمی چیف کے دوران 12 منٹ تک ون آن ون ملاقات بھی ہوئی آرمی چیف اس موقع پر نئے آرمی چیف کی تعیناتی کے حوالے سے مشورے دیئے۔ جنہیں وزیراعظم نے غور سے سنا۔ وزیراعظم محمد نوازشریف نے کہا ہے کہ جنرل راحیل شریف کا تین سال قبل انتخاب ان کی شاندار عسکری صلاحیت‘ قائدانہ خوبیوں اور دیانت کے باعث کیا تھا۔ جنرل راحیل نے خود کو بہترین سپہ سالار ثابت کیا ان سے آئندہ بھی مشاورت جاری رہے گی۔ ہم نے سکیورٹی چیلنجز کا مقابلہ کرنے کے لئے اکٹھے مل کر کام کیا اور مجھے یہ کہتے ہوئے بے حد مسرت محسوس ہوئی ہے کہ آج کا پاکستان 2013ء کے مقابلہ میں زیادہ محفوظ اور مضبوط ہے۔ جنرل راحیل شریف نے ہمیشہ آگے بڑھ کر قیادت فراہم کی۔ جنرل راحیل شریف کی قیادت میں پاکستان کی مسلح افواج نے نہ صرف بیرونی خطرات بلکہ دہشت گردی کے عفریت کا مقابلہ کیا۔ ہم نے کامیابی کے ساتھ ریاست کی رٹ کو قائم کیا اور ہماری خود مختاری کے تحت آنے والے ایک ایک انچ علاقے میں اقتدار اعلیٰ کو بحال کیا۔ ہم یہاں جنرل راحیل شریف کے ملک اور مسلح افواج کے لئے سالہا سال کے شاندار خدمات کے اعتراف اور تشکر کے لئے جمع ہوئے ہیں۔ جنرل راحیل شریف کا تعلق ایسے نازاں خاندان سے ہے جس کی فوج کے لئے خدمت کی روایت ہے۔ میجر عزیز بھٹی شہید اور میجر شبیر شریف شہید کی شہادت اور نشان حیدر کا اعزاز ان کے خاندان کے لئے منفرد اعزاز ہے۔ جنرل راحیل نے کھڑے ہو کر وزیراعظم سے ہاتھ ملایا اور حمایت کرنے پر شکریہ ادا کیا۔
نوازشریف/ راحیل

image_pdfimage_print

Comments - User is solely responsible for his/her words

اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ ”ہم سب“ ایک مثبت سوچ کو فروغ دے کر ایک بہتر پاکستان کی تشکیل میں مدد دے رہا ہے تو ہمارا ساتھ دیں۔ سپورٹ کے لئے اس لنک پر کلک کریں