مسواک کے بل پر ہندوستان کو شکست دینے والے جواری


\"\"

سولہ دسمبر کا دن تھا۔ وہ سازشی نظریوں کا جال بُن رہا تھا جبکہ میں چسکے لے رہا تھا۔
جب مزا دو بالا ہوجاتا تو مدد کی خاطر اس کے لئے ایک اضافی دلیل بھی ڈھونڈ لیتا اور خوشی سے اس کی بانچھیں کھل جاتیں۔
باپ پشاور اور ماں کوہاٹ کی ہے۔ اور گزشتہ پینتیس سال سے امریکہ میں مقیم ہے۔
ناشتے کے کمرے میں میری آٹھ سالہ بیٹی نے بڑی خوشی سے بتایا، بابا یہاں ایک پشتون بھی کام کرتا ہے۔
علیک سلیک ہوئی۔
اس کا باپ ریٹائرڈ فوجی تھا اور خود نیشنل کالج آف آرٹس سے ڈیزائنگ میں ڈگری حاصل کی ہے۔
بیک راؤنڈ جاننے کے بعد سوچا، کیوں نہ اس کی سوچ اور فکر سے آگاہی حاصل ہو۔
شروعات اس نے افغانستان سے کی۔
”افغان نمک حرام ہیں، ہندوستان کے ایجنٹ ہیں اور جو کوئی پیسے دے بس اسی کا ہوا“
جب بھی باچا خان، جی ایم سید، محمودخان اچکزئی، اور نواب اکبر خان بگٹی کا نام لیتا تو شیطان کا لاحقہ اور سابقہ ضرور لگاتا۔
حرامی اور“مہا“ حرامی تو اس کا تکیہ کلام تھا
وہ اس عقیدے کے ساتھ جی رہا ہے کہ پاکستان کو کوئی بھی توڑ نہیں سکتا کیونکہ یہ ملک کلمے کی بنیاد پر وجود میں آیا ہے۔
میں نے ارادتاً اس کو چیلنج نہیں کیا کہ آج ہی کے دن تو پاکستان دو لخت ہوا تھا۔
اس کی نظر میں پاکستان کو ایٹم بم کی ضرورت نہیں کیونکہ مسواک کرنے سے بھی ہندووں کو شکست دی جاسکتی ہے۔
اس کے لئے اس نے ایک غزوے کا حوالہ دیا کہ جب دشمن نے صحابہ کرام کو مسواک کرتے دیکھا اور اسے دانت تیز کرنے کا عمل سمجھ کر جنگ چھڑنے سے قبل ہی بھاگ نکلا۔
میں ہر بات پر ڈیر شہ ڈیر شہ( بہت خوب ) کہتا رہا۔
اس نے میری واہ واہ کو جاہلانہ آہ سمجھ لیا اور ہونٹوں پر طنزیہ مسکراہٹ بکھیرتے ہوئے مشورہ دیا ” تم صحافی ہو لہذا جو کچھ میں نے تمہیں بتایا ہے اس سے لکھ ڈالو“
میں نے خدا حافظ کہا اور جاتے جاتے اس نے موضوع بدلا اور اپنی تعریف میں کہا کہ میں واحد شخص تھا جس نے ایک ہی دن میں جوئے میں تیرہ سو ڈالر کا چیک جیتا تھا۔
پھر ہنس کر کہا ”جوانی بھی خوب گزاری ہے“۔

اسی بارے میں: ۔  امن پسندوں کے خلاف بھارت اور پاکستان کی جنگ

Comments

'ہم سب' کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ کمنٹ کرنے والا فرد اپنے الفاظ کا مکمل طور پر ذمہ دار ہے اور اس کے کمنٹس کا 'ہم سب' کی انتظامیہ سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

2 thoughts on “مسواک کے بل پر ہندوستان کو شکست دینے والے جواری

  • 19-12-2016 at 11:58 pm
    Permalink

    Khud shokar hoga itna halwa kaya hoga…is tara k log sirf halwa kane k leye zinda hote..wo pashtoo ma matal ha…da peshayee por lakaye bazar jorawal..wo is tara k hote ha

  • 20-12-2016 at 1:36 am
    Permalink

    آپ ایک مسلمان کا مذاق اڑا کر خوش ہو گئے ۔ ۔ ۔ اے کاش آپ مسلمان کے پشتی بان ہوتے۔ ۔ ۔ مگر مغرب میں رہ کر مغربیت کا اثر تو ہوتا ہے نا۔ ۔ ۔مغرب ے نے اپنے بوڑھے والدین کو کھر سے باہر کر دیا ۔ ۔ ۔ آپ بوڑھوں کا مزاق اُرا رہے ہیں شاباش!

Comments are closed.