برطانیہ میں کم عمر لڑکیوں کو زیادتی کانشانہ بنانیوالے 4 پاکستانیوں کو ملک بدری کا سامنا


\"\"

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق برطانیہ نے راچ ڈیل کے علاقے میں  کم عمر لڑکیوں کو نشے کا عادی بنانے کے بعد ان کے ساتھ زیادتی کرنے والے  4 پاکستانیوں کو مقدمہ ہارنے کے بعد ملک بدری کا سامنا ہے جب کہ غیر اخلاقی سرگرمیوں میں ملوث ان  پاکستانیوں کی برطانوی شہریت بھی منسوخ کر دی گئی ہے

کم عمر لڑکیوں کے ساتھ زیادتی کرنے اور ان سے غیر اخلاقی سرگرمیاں کروانے والے جنسی درندوں میں شبیر احمد، عادل خان، عبدالرؤف اور عبدالعزیز ملوث ہیں اور یورپ کی انسانی حقوق کی عدالت بھی چاروں کے خلاف فیصلہ سنا چکی ہے۔ لڑکیوں کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے والے گروہ کے سرغنہ شبیر احمد کو 2012 میں زیادتی کا جرم ثابت ہونے پر 22 برس قید کی سزا سنائی تھی جب کہ باقی تینوں افراد ضمانت پر رہا ہو گئے تھے تاہم  یہ معلوم نہیں ہو سکا ہے کہ چاروں افراد کو کب پاکستان ڈی پورٹ کیا جائے گا۔

راچ ڈیل سے تعلق رکھنے والے برطانوی رکن پارلیمنٹ سمنز ڈانس زک نے چاروں مجرمان کو فوری طور پر پاکستان بدر کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم برطانیہ آنے والوں کو خوش آمدید کہتے ہیں تاکہ وہ اس ملک کی ترقی میں اپنا حصہ ڈال سکیں لیکن اگر کوئی قانون کی خلاف ورزی کرتا ہے تو اسے یہاں رہنے کا کوئی حق نہیں ۔ ان کا کہنا تھا کہ چاروں مجرمان انسانی حقوق کی آڑ میں ملک بدری سے نہیں بچ سکتے۔


Comments

'ہم سب' کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ کمنٹ کرنے والا فرد اپنے الفاظ کا مکمل طور پر ذمہ دار ہے اور اس کے کمنٹس کا 'ہم سب' کی انتظامیہ سے کوئی تعلق نہیں ہے۔