دریا کا پھیر کس نے پایا ہے!


\"\"دریا بہتا رہے گا

تم اس کے کنارے

بیٹھو یا نہ بیٹھو

اس کے پانیوں میں اترو یا نہ اترو

اسے پار کرو یا نہ کرو

جسم کی ناؤ اس میں

اتارو یا نہ اتارو

دریا بہتا رہے گا

اس کے آگے بند باندھ کر

جھیل بناؤ

یا مٹی کے پشتوں سے

اس کا راستہ روکو،

یہ پھر چل پڑے گا

پرندوں اور مچھلیوں کی جلو میں

کھیتوں اور میدانوں سے ہوتا ہوا

ایک ابدی بہاؤ کی جانب

ندیاں اور نالے

پھر اس میں آن ملیں گے

دریا بہتا رہے گا

اپنی رَو میں، روانیوں میں

ملاحوں کے گیتوں میں، بانیوں میں

شاعری میں

!! اور کہانیوں میں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔

image_pdfimage_print

Comments - User is solely responsible for his/her words

اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ ”ہم سب“ ایک مثبت سوچ کو فروغ دے کر ایک بہتر پاکستان کی تشکیل میں مدد دے رہا ہے تو ہمارا ساتھ دیں۔ سپورٹ کے لئے اس لنک پر کلک کریں