اسلام کی شبیہ کو اصل نقصان کون پہنچا رہا ہے


گستاخانہ مواد کی بنیاد پر فیس بک بند کرنے کی دھمکی ایسی ہی ہے جیسے کوئی انتہاپسند یورپی داعش و طالبان کے اعمال دیکھ کر اسلام پر پابندی کا مطالبہ کرے۔

دیکھئے پہلی بات تو یہ ہے کہ ایک ہزار بھینسے مل کر بھی اسلام کا اتنا تشخص خراب نہیں کر سکتے جتنا پیر خادم رضوی کی ایک ویڈیو یہ کام کر گذرتی ہے یا
داعش وطالبان نے جو کام کر دکھائے یا
خود کش حملوں کے بعد جس طرح ان کے عذر خواہ آئیں بائیں شائیں کرنے لگتے ہیں یا
اوریا مقبول جان جب عورتوں کو توہین آمیز تشبیہہ دے کر اسلامی اقدار کی حفاظت کا ٹی وی پر بیٹھ کر عزم کرتا ہے۔

دوسری بات یہ کہ دور جدید میں چیزیں بین کرنا ممکن ہی نہیں رہا۔ یوٹیوب بند کر کے آپ نے الٹا یہ دو نمبری سکھائی کہ کیسے blocked ویب سائٹس کو کھولا جاتا ہے۔ اور کیسے ایک غیر معروف تھرڈ گریڈ فلم کو مشہور کرتے ہیں یا سلمان رشدی کی مارکیٹ میں فلاپ کتاب کو بیسٹ سیلر بناتے ہیں۔ ۔ فیس بک کا تو معاملہ ہی دوسرا ہے جو نشے کی طرح اپنے لوگوں کو اپنے سحر میں لئے رکھتی ہے۔

کرنے کا جو کام ہے وہ حسن اخلاق ہے۔ ہم مسلمانوں کو اپنے حسن اخلاق اور بہترین طرز زندگی سے دوسروں کو متاثر کرنا چاہیے تاکہ ہم اسلام کی پہچان بنیں، جیسا کہ رسول پاکؐ نے کیا۔ غصہ جذبات اور تشدد ہمیں دنیا میں الٹا تماشہ بنا دیتے ہیں۔ ذرا سوچئے

image_pdfimage_print

Comments - User is solely responsible for his/her words

اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ ”ہم سب“ ایک مثبت سوچ کو فروغ دے کر ایک بہتر پاکستان کی تشکیل میں مدد دے رہا ہے تو ہمارا ساتھ دیں۔ سپورٹ کے لئے اس لنک پر کلک کریں

ذیشان ہاشم

ذیشان ہاشم ایک دیسی لبرل ہیں جوانسانی حقوق اور شخصی آزادیوں کو اپنے موجودہ فہم میں فکری وعملی طور پر درست تسلیم کرتے ہیں - معیشت ان کی دلچسپی کا خاص میدان ہے- سوشل سائنسز کو فلسفہ ، تاریخ اور شماریات کی مدد سے ایک کل میں دیکھنے کی جستجو میں پائے جاتے ہیں

zeeshan has 142 posts and counting.See all posts by zeeshan