مہمند ایجنسی میں غیر معینہ مدت کے لیے کرفیو نافذ


muhmindوفاق کے زیر انتظام قبائلی علاقے فاٹا کی مہمند ایجنسی میں غیر معینہ مدت کے لیے کرفیو نافذ کردیا گیا.سکیورٹی فورسز نے لاو¿ڈ سپیکر کے ذریعے کرفیو کے نفاذ کا اعلان کیا جبکہ علاقے میں فورسز کا گشت مزید بڑھا دیا گیا ہے.کرفیو کے نفاذ کے بعد سکیورٹی فورسز نے مہمند ایجنسی کے مختلف علاقوں میں شدت پسندوں کے خلاف سرچ آپریشن کا آغاز کردیا.کرفیو کے دوران ایجنسی بھر کے تمام تعلیمی و تجارتی مراکز بند رہیں گے جبکہ لوگ گھروں میں محصور ہوگئے ہیں.پولیٹیکل انتظامیہ کے مطابق کرفیو کے نفاذ کا فیصلہ ایجنسی میں ہونے والے حالیہ دہشت گردی کے واقعات کے بعد کیا گیا.
یاد رہے کہ گذشتہ ہفتے مہمند ایجنسی میں 2 مقامات پر دہشت گردوں کے حملے کے نتیجے میں خاصہ دار فورس کے 9 اہلکار ہلاک ہوگئے تھے.مہمند ایجنسی میں حملوں کی ذمہ داری کالعدم تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) سے الگ ہو کر شدت پسند تنظیم داعش کی حمایت والے عسکریت پسند گروہ جماعت الاحرار نے قبول کی تھی.
واضح رہے کہ جماعت الاحرار میں طالبان کے مہمند ایجنسی کے شدت پسند شامل ہوئے تھے جبکہ سکیورٹی ذرائع کے مطابق اب اس کے تمام کمانڈرز اور عسکریت پسند سرحد پار افغانستان میں موجود ہیں۔مہمند ایجنسی وفاق کے زیرانتظام قبائلی علاقوں میں سے ایک ہے.پاک افغان سرحد پر واقع ان قبائلی علاقوں میں فوج متعدد آپریشنز کر چکی ہے جس کے بعد یہاں سکیورٹی صورتحال بہتر کرنے کا دعویٰ کیا گیا.
مہمند ایجنسی کے ساتھ واقع خیبر ایجنسی میں گذشتہ 2 برسوں میں دو آپریشن ‘خیبر-ون’ اور ‘خیبر-ٹو’ کیے گئے جبکہ شمالی وزیرستان میں جون 2014 سے آپریشن ضرب عضب جاری ہے۔
مہمند ایجنسی میں قیام امن کے لیے ایک ‘امن کمیٹی’ بھی بنائی گئی. 2 ماہ قبل مہمند ایجنسی کی تحصیل بازئی کی کمیٹی نے رضاکارانہ طور پر ہتھیار واپس کیے تھے، اس موقع پر امن کمیٹی کے چیف ملک سلطان نے کہا تھا کہ علاقے میں امن قائم ہو چکا ہے۔


Comments

FB Login Required - comments