مشال قتل کی ابتدائی تحقیق میں توہین مذہب کا عنصر نہیں ملا: پولیس


 

ولی خان یونیورسٹی مردان کے مقتول طالب علم مشعال خان کے ہاسٹل کےکمرے سے تمام شواہد پولیس نے تحویل میں لے لئے ہیں۔ ڈی آئی جی مردان محمد عالم شنواری کا کہنا ہے کہ ابتدائی تحقیقات میں توہین مذہب کا کوئی عنصر سامنے نہیں آیا ۔

پولیس کے مطابق طالب علم کے زیر استعمال تمام چیزوں اور میٹریل سے توہین مذہب کا کوئی امکان نظر نہیں آتا ہے۔

پولیس کے مطابق تشدد کے الزام میں نامزد 8ملزمان سمیت 100 کے قریب طلبہ گرفتار کئے گئے ہیں۔ قتل کی مزید تحقیقات جاری ہیں۔

 

 


Comments

'ہم سب' کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ کمنٹ کرنے والا فرد اپنے الفاظ کا مکمل طور پر ذمہ دار ہے اور اس کے کمنٹس کا 'ہم سب' کی انتظامیہ سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

اسی بارے میں: ۔  بہت گمان کرنے سے احتراز کرو کہ بعض گمان گناہ ہیں