مودی مقبوضہ کشمیرمیں امن نہیں چاہتے جو اصل مسئلہ ہے، پرویز مشرف


سابق صدرپرویزمشرف کا بھارتی ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے کہنا تھا کہ بھارت میں اس وقت ہندو انتہا پسند جماعت کی حکومت ہے اور نریندرمودی اس کے متحرک  رہنما ہیں لیکن بھارتی وزیراعظم خطے اور مسلمانوں کی بہتری کے لئے کوئی کردارادا نہیں کررہے۔ ان کا کہنا تھا کہ نریندر مودی اور ان کی حکومت کے اقدام پاکستان کے خلاف ہیں اور بھارتی وزیراعطم جنت نظیر کشمیر میں امن نہیں چاہتے جو سب سے بڑا مسئلہ ہے۔

دہشت گردی کے حوالے سے سابق صدرکا کہنا تھا کہ اسلام کا دہشت گردی سے کوئی تعلق نہیں اور دہشت گردوں کا کوئی مذہب نہیں ہوتا۔ پاکستانی سیاست کے حوالے سے پرویز مشرف کا کہنا تھا کہ وطن واپس جاؤں گا کیونکہ اس وقت ملک کو تیسری سیاسی قوت کی ضرورت ہے لیکن ساتھ ہی واضح کیا کہ ان کا وزیراعظم بننے کا کوئی ارادہ نہیں ۔

امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ کے حوالے سے پرویز مشرف کا کہنا تھا کہ وہ ایک متنازع شخصیت کے مالک ہیں اور ان کا مسلم ممالک کے شہریوں پر سفری پابندی کا فیصلہ ٹھیک نہیں کیونکہ ٹرمپ کے اس فیصلے نے متعدد چیزوں کو متاثر کیا ہے۔


Comments

'ہم سب' کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ کمنٹ کرنے والا فرد اپنے الفاظ کا مکمل طور پر ذمہ دار ہے اور اس کے کمنٹس کا 'ہم سب' کی انتظامیہ سے کوئی تعلق نہیں ہے۔