پاناما کیس کی تحقیقات کیلیے قائم جے آئی ٹی آج سے کام کا آغاز کرے گی


سپریم کورٹ کے ایڈیشنل رجسٹرارمحمد علی  پہلے اجلاس میں پاناما کیس کے عدالتی فیصلے اورعدالت میں پیش کردہ ریکارڈ جے آئی ٹی کے سپرد کریںگے تاہم اس موقع پر وہ ٹیم کوکیس سے متعلق تفصیلی بریفنگ بھی دیں گے۔

ذرائع کے مطابق جے آئی ٹی کے قیام کے نوٹیفکیشن میں اس کے ٹی او آرز بھی درج کیے گئے ہیں اور تحقیقات کے لیے ٹائم فریم بھی مقرر کیا گیا ہے، جے آئی ٹی ان شخصیات کو بھی طلب کریگی جن پرالزامات عائدکیے گئے ہیں جبکہ بیرون ملک موجود سرمائے کی منتقلی سے متعلق شواہد تلاش کیے جائیں گے اور قطر سمیت دیگر ممالک سے رابطہ کر کے وہاں کی گئی سرمایہ کاری سے متعلق بھی شواہد کی فراہمی درخواست کی جائیگی۔

واضح رہے کہ جے آئی ٹی روزانہ کی بنیاد پراپنا کام کرے گی اور اس کے تمام اجلاس اور کارروائی ان کیمرہ ہوگی، یاد رہے کہ ملک کے تمام اداروں، وزارتوں اور ڈویژنوں کو جے آئی ٹی کے ساتھ پاناما کیس کی تحقیقات میں تعاون کا کہا گہا ہے جبکہ فنڈزبھی فراہم کردیے گیے ہیں۔

 


Comments

'ہم سب' کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ کمنٹ کرنے والا فرد اپنے الفاظ کا مکمل طور پر ذمہ دار ہے اور اس کے کمنٹس کا 'ہم سب' کی انتظامیہ سے کوئی تعلق نہیں ہے۔