حقوق نسواں بل آئین اور دو قومی نظریہ سے متصادم ہے : اسلامی نظریاتی کونسل


\"molanaاسلامی نظریاتی کونسل کا ایجنڈے سے ہٹ کر تحفظ حقوق نسواں بل پر غور کیا گیا۔ پنجاب اسمبلی سے حقوق نسواں بل کی کاپی بھی منگوانے کا فیصلہ ، آئندہ اجلاس میں بغور جائزہ لینے کے بعد کونسل اس معاملے پر اپنی سفارشات مرتب کرے گی۔ چیئرمین مولانا محمد خان شیرانی کی زیرصدارت اسلامی نظریاتی کونسل کا اجلاس اسلام آباد میں ہوا۔ اجلاس کے ایجنڈے میں قرآن بورڈ کی تشکیل ، سود کا خاتمہ ، سائنسی تحقیق کیلئے لاش کے استعمال سمیت دیگر امور ایجنڈے میں شامل تھے تاہم ایجنڈے سے ہٹ کر پنجاب اسمبلی سے منظور ہونے والے حقوق نسواں بل کا معاملہ زیر غور رہا۔ اراکین نے کہا کہ بل آئین اور دو قومی نظریہ سے متصادم ہے ، آئندہ اجلاس میں بحث کیلئے لایا جائے ، آئندہ اجلاس میں اس معاملے کا بغور جائزہ لینے کے بعد کونسل اس معاملے پر اپنی سفارشات مرتب کرے گی۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ کونسل نے پنجاب اسمبلی سے حقوق نسواں بل کی کاپی بھی منگوانے کا فیصلہ کیا ہے۔ خواتین تحفظ بل پر غور کے باعث اجلاس کے دیگر ایجنڈا پر بحث نہ ہو سکی۔

image_pdfimage_print

Comments - User is solely responsible for his/her words

اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ ”ہم سب“ ایک مثبت سوچ کو فروغ دے کر ایک بہتر پاکستان کی تشکیل میں مدد دے رہا ہے تو ہمارا ساتھ دیں۔ سپورٹ کے لئے اس لنک پر کلک کریں

One thought on “حقوق نسواں بل آئین اور دو قومی نظریہ سے متصادم ہے : اسلامی نظریاتی کونسل

Comments are closed.