بھارت میں دہشت گردی کا ممکنہ خطرہ: پاکستان کی بھارت کو خفیہ اطلاع


indiaبھارت میں دہشت گردی کے ممکنہ خطرے کے پیش نظر مشیر قومی سلامتی لیفٹیننٹ جنرل ناصر جنجوعہ نے بھارتی ہم منصب اجیت ڈوول کو دہشت گردوں سے متعلق خفیہ اطلاع فراہم کردی۔
پاکستان کی طرف سے پہلی بار دہشت گردی کے ممکنہ خطرے کے پیش نظر بھارت کو خفیہ معلومات فراہم کی گئی۔پاکستان کے اعلیٰ حکام کی بھارتی ہم منصب سے اس سلسلے میں اہم بات چیت ہوئی کہ دس خودکش بمبارریاست گجرات میں داخل ہوئے،جس کے بعد گجرات کے تمام اضلاع میں ہائی الرٹ کردیا گیا اور اہم تنصیبات پر سکیورٹی میں اضافہ کردیا گیا۔
بھارتی اخبار’ٹائمز آف انڈیا ‘اور دیگر میڈیا رپورٹ کے مطابق بھارتی ریاست گجرات میں اس وقت ہائی الرٹ جاری کیا گیا جب بھارتی قومی سلامتی کے مشیر اجیت دوول کو اپنے پاکستانی ہم منصب ناصر خان جنجوعہ کی طرف سے ایک انٹیلی جنس اطلاعات فراہم کی گئی کہ 10 دہشت گرد گجرات میں داخل ہو چکے ہیں ،داخل ہو نے والے فدائین( خوکش بمبار) ہیں جن کا تعلق لشکر طیبہ اور جیش محمد سے بتایا جارہا ہے۔
اطلاعات کے بعد سکیورٹی نیشنل گارڈز کے دو سکواڈ گجرات کی طرف روانہ کیے گئے۔پاکستانی ہم منصب سے بات چیت کے بعد دوول نے گجرات میں اعلیٰ حکام سے بات کرکے حساس تنصیبات، عبادت گاہوں اور عوامی مقامات کی سکیورٹی سخت کرادی۔اہم یادگاروں اور مذہبی مقامات جیسا کہ سومناتھ مندر، دوارکا مندر، آکاشردھم , پاور پلانٹس، دفاعی تنصیابات ، ڈیمز وغیرہ کے مراکز پر سکیورٹی میں اضافہ کردیا گیا۔
انٹیلی جنس اداروں کا خیال ہے اس دراندازی کا مقصد ہندووں کا سالانہ مذہبی تہوار’ مہا شیواراتری‘ پربدنظمی اور افرتفری کی صورت حال پیدا کرناہے۔ شیواراتری تہوار پیر کو ہے۔
اخبار کے مطابق تاریخ میں پہلی بار ایسا ہوا کہ پاکستان نے بھارت سے مخصوص انٹیلی جنس معلومات کا تبادلہ کیا۔ ریاست کے ڈائریکٹر جنرل پولیس پی سی ٹھاکر نےاس معاملے پر ایک ہنگامی اجلاس طلب کیا اور تمام چھوٹے اور بڑے اضلاع الرٹ جاری کردیا۔ڈی جی پی نے مزید ہدایات دیتے ہوئے تمام پولیس افسران اور اہلکاروں کی آئندہ احکامات تک چھٹیاں منسوخ کردیں،جس کا نوٹیفکیشن رات گئے جاری کیا گیا کہ رخصت پر پولیس افسران فوری طور پر ڈیوٹی دوبارہ شروع کریں۔
ذرائع کا کہنا ہے کہ ان ہدایات کو بڑی سنجیدگی سے لیا گیا کیوں کہ ریاست میں دہشت گردی کا بہت زیادہ خطرہ ہے۔ یہی وجہ ہے کہ فوراًپولیس افسران اور حکام کا اعلیٰ سطحی اجلاس سیکرٹریٹ میں منعقد ہوا۔ رپورٹ کے مطابق گزشتہ تین ماہ کے دوران کچھ کے علاقے سے پانچ لاوارث کشتیا ں ملی ہیں اور جمعہ کے روز بھی بی ایس ایف ٹیم کو کچھ کے علاقے کوٹیشوار کے ساحل پر ایک لاوارث کشتی ملی۔
دریں اثنا، پٹھانکوٹ میں بھارت کے ویسٹرن آرمی کمانڈر لیفٹیننٹ جنرل کے جے سنگھ نے میڈیا کوبتایا تھا کہ انہیں آج سلامتی سے متعلق مسائل درپیش ہیں کیونکہ شیواراتری تہوار آرہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کچھ اطلاعات ہیں کہ گڑ بڑ ہونے والی ہے اس لئے اضافی اقدامات کیے ہیں، جب ان سے خفیہ اطلاعات کی تفصیلات سے آگاہ کرنے کا کہا گیا تو انہوں نے انکار کر دیا اور کہا کہ اس طرح کے واقعات ذرائع ابلاغ میںہیجان پیدا کرتے ہیں، کیونکہ پارلیمنٹ کا سیشن بھی جاری ہے اور اہم تہوار بھی قریب ہے۔


Comments

FB Login Required - comments