امریکی صدر ٹرمپ کل (منگل- صبح چھ بجے) افغانستان پالیسی کا اعلان کریں گے


افغانستان اور پاکستان سمیت جنوبی ایشیا کے بارے میں امریکی صدر ٹرمپ کی پالیسی کیا ہو گی ؟ اس بارے میں ٹرمپ پاکستانی وقت کے مطابق منگل کی صبح 6 بجے ٹیلی وژن پر اپنی قوم سے خطاب میں آگاہ کریں گے۔ وائٹ ہاوس کے مطابق ٹرمپ مزید امریکی فوجی افغانستان بھیجنے یا نہ بھیجنے کا اعلان کریں گے۔ امریکی عہدیداروں اور میڈیا کا دعویٰ ہے کہ ٹرمپ افغانستان میں امریکی فوجیو ں کی تعداد 3 سے 5 ہزار بڑھانے کی منظوری کا اعلان کریں گے۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ پاکستانی وقت کے مطابق منگل کی صبح 6 بجے افغانستان اور جنوبی ایشیا سے متعلق نئی امریکی پالیسی کا اعلان کریں گے۔ اس حوالے سے جمعہ کے روز کیمپ ڈیوڈ میں قومی سلامتی سے متعلق معاملات پر اہم مشاورت مکمل کرلی گئی ہے۔ نئی پالیسی میں اس بات کا اعلان کیا جائے گا کہ امریکا افغانستان میں مزید فوجی بھیجےگا یا تمام فوج کو نکال کرافغانستان میں صرف نجی کنٹریکٹرز کی مدد لی جائے گی ۔

تجزیہ نگاروں کے مطابق خطے میں پاکستان کی جیو اسٹریٹجک اہمیت کی وجہ سے امریکی حکومت اسے نظر انداز نہیں کر سکتی اور صدر ٹرمپ نے اس بارے میں بھی نئی وسیع تر پالیسی اپنانے پر زور دیا ہے۔

اس وقت افغانستان میں 8 ہزار 400 امریکی اور 5ہزار نیٹو ممالک کے فوجی تعینات ہیں۔ جمعہ کے روز کیمپ ڈیوڈ میں ہونے والی مشاورت میں اعلیٰ فوجی عہدیداروں نے سفارش کی تھی کہ افغانستان میں 3سے 5ہزار مزید امریکی فوجی بھیجے جائیں۔ امریکی عہدیداروں اور میڈیا کا دعویٰ ہے کہ صدر ٹرمپ اس تجویز کی منظوری دے دیں گے۔

اسی بارے میں: ۔  نیشنل ایکشن پلان کا جاہ و جلال صرف سندھ میں نظر آتا ہے: چانڈیو

Comments

'ہم سب' کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ کمنٹ کرنے والا فرد اپنے الفاظ کا مکمل طور پر ذمہ دار ہے اور اس کے کمنٹس کا 'ہم سب' کی انتظامیہ سے کوئی تعلق نہیں ہے۔