کے پی گھریلو تشدد بل سے پاکستان کی عزت بڑھے گی


پی ٹی آئی اور جماعت اسلامی کی حکومت خیبر پختونخوا اسمبلی میں گھریلو تشدد کے حوالے سے بل لا رہی ہے۔ یہ بل پاس ہونے کے بعد اس صوبے میں کوئی بھی اپنی بیوی کی پٹائی بلا وجہ نہیں کر سکے گا۔ اور ہاں اگر معقول وجہ ہو تو پھر بات الگ ہے۔ کچھ باتوں پر تو بیوی کو پھینٹی لگانا آف کورس ضروری ہوتا ہے۔ کیونکہ اگر بیوی کو بالکل ہی پھینٹی نہ لگائی جائے تو پھر بے غیرتی پھیل جائے گی اور ہم یورپ بن جائیں گے جو کہ ایک گالی ہے۔ اور خدا ہمیں اس گالی سے ہمیشہ محفوظ رکھے۔

کون کہتا ہے کہ خیبر پختونخوا کی حکومت یعنی پی ٹی آئی اور جماعت اسلامی کو عوتوں کے حقوق کا خیال نہیں۔ یہ سب مخالفوں کی اڑائی ہوئی باتیں ہیں اور اس بل کے بعد مخالفوں کے منہ بند ہو جائیں گے یا شاید کھلے کے کھلے رہ جائیں گے۔ ساتھ ہی ساتھ شریف، فرمانبردار، عبادت گزار، اپنے خاوندوں کی ملکیتی اور جنت کی حقدار عورتیں جن کا ذکر اکثر ہی رشتے کے اشتہاروں میں کیا جاتا ہے، اپنے خاوندوں یا گھر کے دوسرے رشتہ دار مردوں کے ہاتھوں بالکل محفوظ ہو جائیں گی۔ تبدیلی آ رہی ہے۔

اس نئے قانون سے وہ شریف لوگ بہت خوش ہیں جو بلا وجہ اپنی بیویوں کی پٹائی کی تکلیف نہیں کرتے۔ ہاں البتہ وہ غیر معقول لوگ جو اپنی بیویوں کی پٹائی بغیر کسی معقول اور جائز وجہ کے کرتے تھے وہ اپنی خیر منائیں، کے پی میں ان کے لیے کوئی جگہ نہیں ہے۔ انہیں پہلے کوئی معقول وجہ ڈھونڈنی ہو گی پھر ہی قانوناً انہیں اپنی بیوی کی پٹائی کی اجازت دی جائے گی۔ اور اگر آپ نے اپنی بیوی کی پٹائی کر دی ہے تو فائل کا پیٹ بھرنے کے لیے وجہ بعد میں ڈھونڈی جا سکتی ہے۔ ہم امید کرتے ہیں کہ کے پی حکومت قانون میں اس کی گنجائش ضرور رکھے گی۔

اسی بارے میں: ۔  پرویز رشید، شیخ رشید اور جمہوریہ کا عروج و زوال

اگر آپ پریشان ہیں کہ بیوی کی پٹائی کے لیے کون سی معقول وجوہات ہیں تو میں آپ کو یقین دلاتا ہوں کہ کے پی نیا پاکستان بن رہا ہے یا شاید بن چکا ہے۔ کیونکہ تبدیلی آ نہیں رہی بلکہ تبدیلی آ چکی ہے اور وہاں کی حکومت اور اسمبلی ادھورے کام نہیں کرتی۔ اس قانون کے ساتھ ہی شریف لوگوں کی سہولت کے لیے بیوی کی پٹائی کرنے کے لیے معقول اور جائز وجوہات کی لسٹ کی تیاری جاری ہے۔ اس کے لیے کے پی حکومت نے کونسل آف اسلامک آئیڈیولوجی کی خدمات حاصل کر لی ہیں۔ کونسل مولانا شیرانی صاحب کی سربراہی میں دن رات کام کر رہی ہے اور امید کی جاتی ہے کہ بیوی کی پٹائی کے لیے معقول وجوہات کی مکمل فہرست جلد ہی منظر عام پر لائی جائے گی۔ مولانا اشرفی صاحب کا کہنا ہے کہ تشدد کی روک تھام کے حوالے سے انہیں مولانا شیرانی صاحب کی صلاحیتوں پر پورا اعتماد ہے۔ عورتوں اور بچیوں کو پھینٹی لگانے کی جائز وجوہات شیرانی صاحب سے بہتر کوئی نہیں ڈھونڈ سکتا۔

مزید بتاتا چلوں کہ کے پی حکومت نے بیویوں کی پٹائی کی باقاعدہ اور جائز وجوہات ڈھونڈنے اور ان کی ایک مکمل لسٹ تیار کرنے کے لیے صرف کونسل پر بھروسہ نہیں کیا۔ ہمیں یہ بتایا گیا ہے کہ کونسل آف اسلامک آئیڈیولوجی کی تیار کردہ لسٹ کی تصدیق جمائمہ خان سے کروائی جائے گی۔ جمائمہ چونکہ پی ٹی آئی کی آئیڈیولوجی سے وابستہ ہیں اور اس کی بھرپور تائید کرتی ہیں اور پھر انہیں عمران خان کی منکوحہ ہونے کا شرف بھی حاصل ہوا تھا اس لیے وہ اس بات کی تصدیق کریں گی کہ انہیں عمران خان کی پھینٹی سے بچنے کے لیے کن کن چیزوں سے دور رہنا پڑتا تھا۔ اور وہ یہ بھی تصدیق کریں گی کہ عمران خان جب ان کے شوہر تھے تو انہیں ان لسٹ شدہ جائز وجوہات کے علاوہ انہوں نے کبھی نہیں پھینٹا تھا۔ اس سے یہ بات بھی ثابت ہو جائے گی کہ عمران جب لندن یا امریکہ جاتے ہیں تو بھی کوئی الگ چہرہ نہیں لگا لیتے۔ وہ لندن میں بھی ایسےہی ہوتے ہیں جیسے کے پی کا گھریلو تشدد کا بل پاس کرواتے ہوئے ہیں۔

اسی بارے میں: ۔  خطرناک وقت

ہم نے اس سلسلے میں جمائمہ خان سے رابطہ کیا تو انہوں نے اس بات کی تصدیق کی ہے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ اپنی بیویوں کو پھینٹی لگانے کی جائز وجوہات کی فہرست کی تصدیق وہ اکیلے نہیں کریں گی بلکہ لندن اور اس کے گردونواح میں رہنے والی عمران خان سے متعلقہ باقی خواتین کا ایک گروپ بھی بنائیں گی۔ ان بدیشی خواتین کا گروپ بھی مل کر کونسل آف اسلامک آئیڈیولوجی کی تیار کردہ خواتین کو پھینٹی لگانے کی جائز وجوہات کی لسٹ کو پرکھے گا۔ وہ نہ صرف اس کی تصدیق کریں گی بلکہ سوشل میڈیا پر اس لسٹ کو وائرل کریں گی اور اس سے ساری دنیا میں پاکستان کی عزت مین اضافہ ہو گا۔

پس خیال: یورپ کی عورت کو تشدد سے مکمل بچاؤ کا قانون تو ٹھیک ہے۔ عمران اس کی مخالفت نہیں کرتے۔ لیکن کے پی کی عورت تو اپنے آپ کو یورپ کی عورت کے برابر نہ سمجھے۔ اسے تھوڑی بہت پھینٹی لگانا تو قانوناً جائز ہونا چاہیے۔ ہو سکتا ہے کہ عمران کے بچے کسی وقت عمران سے اس سلسلے میں کبھی سوال کر بیٹھیں۔

 


Comments

'ہم سب' کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ کمنٹ کرنے والا فرد اپنے الفاظ کا مکمل طور پر ذمہ دار ہے اور اس کے کمنٹس کا 'ہم سب' کی انتظامیہ سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

سلیم ملک

سلیم ملک پاکستان میں شخصی آزادی کے راج کا خواب دیکھتا ہے۔ انوکھا لاڈلا کھیلن کو مانگے چاند۔

salim-malik has 135 posts and counting.See all posts by salim-malik