چارسدہ: سیشن کورٹ میں خودکش دھماکے میں 15 افراد شہید


charsadhaمہمند ایجنسی کی تحصیل شب قدر میںسیشن کورٹ کے احاطے میں خودکش دھماکے کے نتیجے میں2 پولیس اہل کاروں، خاتون اور بچی سمیت 15افرادشہید اور 20 زخمی ہوگئے۔
پولیس کے مطابق خودکش دھماکا اس وقت ہوا جب احاطہ عدالت کے گیٹ پر پولیس اہلکار کے روکنے کی کوشش کی ، جس کے بعد فائرنگ کا تبادلہ ہوا اور پھر حملہ آور نے خود کو دھماکے سے اڑا لیا۔
دھماکا اس قدر شدید تھا کہ اس کی آواز دور دور تک سنی گئی، دھماکے کے نتیجے میں احاطہ عدالت میں کھڑی کئی گاڑیوں میں آگ لگی گئی۔ دھماکے کے بعد لوگوں نے اپنی مدد آپ کے تحت زخمیوں کو تحصیل ہسپتال منتقل کیا ، جبکہ شدید زخمیوں کو لیڈی ریڈنگ ہسپتال پشاور منتقل کردیا گیا ہے۔
تحصیل ہسپتال چارسدہ میں افراتفری کا عالم دیکھنے میں آیا، اس موقع پر انتہائی رقت آمیز مناظر دیکھنے میں آئے اورلواحقین اپنے پیاروں کو دیوانہ وار تلاش کرتے رہے۔پولیس نے دھماکے کے تحقیقات شروع کردی ہیں جبکہ شب قدر کے داخلی و خارجی راستوں پرسکیورٹی بڑھادی گئی ہے۔
ڈی آئی جی مردان سعید وزیرنے میڈیا سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ ممکن ہے کہ حملہ آورکاہدف پرہجوم عدالت ہو جہاں ججز، وکلا اورشہری بڑی تعداد موجود ہوتے ہیں۔ لیکن گیٹ پر تعینات پولیس اہلکاروں نے بہادری کا مظاہرہ کیا ،پولیس اہلکاروں نے فائرنگ کے باوجود اپنی جان کی پرواہ نہ کرتے ہوئے حملہ آورکو آگے جانے سے روکا۔
وزیر اعظم نواز شریف نے خودکش دھماکے کی شدید مذمت کرتے ہوئے قیمتی جانوں کے زیاں پردکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے۔


Comments

FB Login Required - comments