آج کون ایم کیوایم چھوڑ رہا ہے؟


mustafa kamalمتحدہ قومی موومنٹ سے الگ ہو کر نئی جماعت بنانے والے کراچی کے سابق ناظم (میئر) مصطفی کمال نے ایک بار پھر پریس کانفرنس کا اعلان کر دیا ہے۔مصطفی کمال اور انیس قائم خانی کی جانب سے جاری کی گئی پریس ریلیز میں اس حوالے سے کچھ نہیں کہا گیا کہ ان کی پریس کانفرنس کا موضوع کیا ہے۔
یاد رہے کہ رواں ماہ 3 مارچ کو مصطفی کمال اور انیس قائم خانی نے مشترکہ پریس کانفرنس میں متحدہ قومی موومنٹ سے علیحدگی کا اعلان کرتے ہوئے ایم کیو ایم قائد الطاف حسین پر ہندوستانی خفیہ ادارے ‘را’ کا ایجنٹ ہونے کا الزام لگایا تھا جبکہ ان پر شراب کے نشے میں خطاب کرنے کا بھی دعویٰ کیا تھا۔مصطفی کمال کی پریس کانفرنس : ‘ہم محب وطن لوگ تھے، ‘را’ کے ایجنٹ ہوگئے’۔اسی پریس کانفرنس میں مصطفی کمال نے نئی جماعت بنانے کا بھی اعلان کیا، تاہم اس کا کوئی نام نہیں رکھا گیا اور پاکستانی پرچم کو پارٹی کا جھنڈا قرار دیا گیا تھا۔
3 دن پہلے مصطفی کمال اور انیس قائم خانی کی جانب سے ایک اور پریس کانفرنس کی پریس ریلیز جاری کی گئی تھی، جس میں کوئی ایجنڈا نہیں بتایا گیا تھا, اس پریس کانفرنس میں ایم کیو ایم کے سینیئر کارکن اور سندھ اسمبلی کے رکن ڈاکٹر صغیر احمد نے الطاف حسین سے علیحدگی اور مصطفی کمال کا ساتھ دینے کا اعلان کیا۔دوسری جانب دو روز پہلے انیس قائم خانی نے اپنے ایک بیان میں کہا تھا کہ جلد بتائیں گے قافلے میں کون کون شامل ہے۔
‘نئی پارٹی’ بنانے والے اِن رہنماو¿ں نے اپنی جماعت کا بڑا مقصد ملک میں صدارتی نظامِ حکومت اور مقامی حکومتوں کے تحت اختیارات کی نچلی سطح پر منتقلی بتایا۔دوسری جانب متحدہ قومی موومنٹ نے سابق ناظم کراچی مصطفی کمال کی جانب سے الطاف حسین پر الزامات مسترد کو مسترد کر دیا تھا جبکہ ایم کیو ایم کی رابطہ کمیٹی کے کنوینر ندیم نصرت نے اپنے بیان میں کہا تھا کہ اسٹیبلشمنٹ سے گزارش ہے کہ ‘کسی’ پر ہاتھ رکھنے کے بجائے الطاف حسین سے بات کی جائے۔


Comments

FB Login Required - comments