امریکی صدر باراک اوباما تاریخی دورے پر کیوبا پہنچ گئے


amricaامریکی صدر باراک اوباما تاریخی دورے پر کیوبا پہنچ گئے جہاں انھوں نے ہوانا میں تاریخی مقامات کا دورہ کیا.خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس (اے پی) کے مطابق ہوانا میں امریکی سفارت خانے کے عملے سے ملاقات کے موقع پر صدر اوباما کا کہنا تھے، ‘یہ ایک تاریخی دورہ اور ایک تاریخی موقع ہے۔ تین روزہ دورے کے موقع پر امریکی صدر کے ہمراہ ان کی اہلیہ مشعل اوباما اور بیٹیاں مالیہ اور ساشا بھی موجود تھیں.باراک اوباما نے ہوانا میں عالمی ورثہ قرار دیئے جانے والے مقام کا بھی دورہ کیا۔
واضح رہے کہ اوباما کا دورہ کیوبا گذشتہ برس 88 برس میں کسی بھی امریکی صدر کا پہلا دورہ ہے.کیوبا کے صدر عموماً دنیا کی اہم شخصیات کے استقبال کے لیے خود موجود ہوتے ہیں لیکن اتوار کو جب اوباما کے جہاز نے ہوانا میں لینڈ کیا تو ان کے استقبال کے لیے کیوبا کے اعلیٰ عہدیداران تو موجود تھے لیکن صدر راو¿ل کاسترو اس موقع پر موجود نہیں تھے.
راول کاسترو کی پیر کو صدارتی محل پیلس آف دی ریوولوشن (Palace of the Revolution) میں امریکی صدر براک اوباما سے ملاقات شیڈول ہے.
صدر اوباما اور راول کاسترو کے درمیان ملاقات کے دوران تجارتی اور سیاسی معاملات پر گفتگو و شنید ہوگی.
گذشتہ 50 برسوں سے کسی بھی امریکی صدر یا امریکی شہری کے لیے کیوبا کی سرزمین پر قدم رکھنا ناقابل تصور تھا، امریکا کے تعلقات کیوبا کے ساتھ اس وقت کشیدہ ہوگئے تھے جب 1961 میں فیڈل کاسترو کے انقلاب کے بعد کمیونزم کے مغرب میں پھیل جانے کے خدشات پیدا ہوگئے تھے.
دوسری جانب باراک اوباما کی آمد سے قبل ہوانا میں حکومت مخالف ایک گروپ ’لیڈیز اِن وائٹ‘ کی درجنوں ارکان کو پولیس نے حراست میں لے لیا، جنھیں بعد ازاں رہا کردیا گیا.سیاسی تجزیہ نگاروں کی رائے میں یہ دورہ امریکا اور کیوبا کے تعلقات میں نئے موڑ کی حیثیت رکھتا ہے.


Comments

FB Login Required - comments