حکومت بلدیاتی اداروں کو فعال کرے : فاروق ستار


\"farooqمتحدہ قومی موومنٹ کے رہنما فاروق ستار کا کہنا ہے کہ ملک کے لئے ایک پالیسی نہ رکھنا بڑی جماعتوں کی منافقت ہے۔
اسلام آباد میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے فاروق ستار کا کہنا تھا کہ دوبڑی سیاسی جماعتوں نے اپنے مفادات کے تحفظ کے لئے مختلف پالیسیاں اپنائیں، بڑی جماعتیں اپنے مفادات کے تحت ہر صوبے میں مختلف پالیسیاں بناتی ہیں اور ملک کے لئے ایک پالیسی نہ رکھنا بڑی جماعتوں کی منافقت ہے، مسلم لیگ (ن) کو سندھ میں شکست کا سامنا کرنا پڑا تو اس نے ہمارے موقف کی حمایت کردی۔
فاروق ستار کا کہنا تھا کہ بلدیاتی انتخابات سپریم کورٹ کے حکم پر ہوئے جس کے بعد بلدیاتی اداروں کو فعال ہوجانا چاہیے تھا لیکن نہیں ہوسکے، الیکشن کمیشن بھی اپنی ذمے داری پوری نہیں کررہا، الیکشن کمیشن شوآف ہینڈ کا معاملہ کالعدم قراردیتا تو معاملہ عدالت میں نہ آتا، رواں سال بھی بلدیاتی اختیارات صوبائی حکومتوں نے استعمال کئے جب کہ 6 ماہ گزر گئے لیکن میئرزاورڈپٹی میئرز کے انتخابات نہیں ہوسکے۔
ایم کیو ایم رہنما کا کہنا تھا کہ الطاف حسین کے متعلق غلط خبریں دینے والے سنیئر اینکرز کو رویے پر نظرثانی کرنی چاہیے جب کہ مصطفی کمال کی پارٹی کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ مصطفی کمال نے بچہ پارٹی کانام رکھ لیا لیکن کان میں اذان ہم دیں گے۔ سابق صدر پرویز مشرف کی روانگی کے حوالے سے پوچھے گئے سوال پر فاروق ستار نے کہا کہ جب میاں بیوی راضی ہیں تو کیا کرے گا قاضی۔


Comments

'ہم سب' کا کمنٹس سے متفق ہونا ضرور نہیں ہے۔ کمنٹ کرنے والا فرد اپنے الفاظ کا مکمل طور پر ذمہ دار ہے اور اس کے کمنٹس کا 'ہم سب' کی انتظامیہ سے کوئی تعلق نہیں ہے۔