مولوی…. سیکولرزم کا ہراول دستہ؟


asif Mehmoodایک عرصے سے کہہ رہا ہوں کہ اہل مذہب اس ملک میں سیکولرزم کا ہراول دستہ ثابت ہوں گے اور اس معاشرے نے کبھی شعوری طور پر اپنی مذہبی شناخت سے دستبردار ہو کر سیکولر ہونے کا فیصلہ کر لیا تو اس کی وجہ سیکولر احباب کی علمی کاوشیں نہیں بلکہ اہل مذہب کا اپنا نامہ اعمال ہو گا…. آ ج جنید جمشید کے واقعے نے میری رائے کو مزید تقویت دے دی ہے۔ یہی حال رہا تو انجام کچھ اتنا نامعلوم بھی نہیں ہے۔ایک گروہ کی رائے میں جنید جمشید گستاخ ہے، دوسرے کی رائے میں یہ گروہ مشرک ہے۔ایر پورٹس ، سڑکوں اور چوراہوں پر عوامی عدالتیں لگنا شروع ہو گئیں تو کبھی مولانا طارق جمیل ایک گروہ سے عزت افزائی کروا رہے ہوں گے تو گاہے پیر امین الحسنات دوسرے گروہ کی مہمان نوازی کا لطف اٹھا رہے ہوں گے۔

معلوم نہیں کس کا شعر ہے

ہم پرندے ہیں نہ مقتول ہوائیں پھر بھی
آ کسی روز کسی دکھ پہ اکٹھے روئیں


Comments

FB Login Required - comments

3 thoughts on “مولوی…. سیکولرزم کا ہراول دستہ؟

  • 27-03-2016 at 9:52 pm
    Permalink

    We need peaceful Pakistan, be it religious or secular

  • 28-03-2016 at 2:18 pm
    Permalink

    درست مگر اس کی اصل ذمہ داری گھوم پھر کر حکومت پر ہی آتی ھے، صرف ہمارے ہاں ہی کیوں فیصلے سرراہ ھورھے ہیں؟؟ اس لیئے کہ ہماری اکثریت ان پڑھ ھے؟ ہم مذہب کے نام پر جنونی ہیں؟ یا مذہبی جماعتیں سیاست چمکانے کے لیئے یہ سب کرواتی ہیں؟ یقیناََ یہ سب باتیں بھی ہیں مگر اصل وجہ صرف یہ ھے کہ ہمارہ معاشرہ انصاف پر یقین ہی نہیں رکھتا نہ انصاف کرنے پر اور نہ ہی اُن اداروں پر جو اس کے ذمہ دار ہیں۔ مقننہ جو قانون بناتی ھے، انتظامیہ جو اس قانون پر عملدرامد ممکن بناتی ھے اور عدلیہ جو اسی قانون کے نفاذ میں انصاف کو یقینی بناتی ھے کیا ان اداروں کی نااہلی، غیر ذمہ داری اور لاپرواہی بنیادی طور پراس طواف الملوکی کی ذمہ دار نہیں؟

  • 28-03-2016 at 2:27 pm
    Permalink

    یہ معاملہ تو مذہبی تھا مگر ہمارے ہاں بیشتر فیصلے اسی خود ساختہ منصفی کے تحت ہی ھورھے ہیں، چاھے وہ معمولی جھگڑا ھو یا بیش قیمت املاک کی ملکیت کا، بہت سے بہت معاملی کسی پنچائیت تک جاتا ھے جو ہر قانون اور قائدہ سے بالاتر ھوکر مافوق الفطرت فیصلہ کرتی ھے جو سب کے لیئے قابل قبول بھی ھوتا ھے۔ ونی، کاروکاری، وٹہ سٹہ اور اس جیسی جہلانہ فرسودہ رسوم بھی اسی بازاری انصاف کی ہی غماز ہیں

Comments are closed.