میں بہت پریشان ہوں!

میں اپنے ایک دوست کو کبھی بہت خوش اور کبھی بہت پریشان دیکھتا ہوں۔ ایک دن وہ خوش نظر آیا تو میں نے اس کی خوشی کی وجہ پوچھی، بولا آج صبح سو کر اٹھا، گھر سے باہر نکلا تو ٹھنڈی ٹھنڈی ہوا چل رہی تھی، دل خوش ہوگیا اور ابھی تک اس ٹھنڈی ہوا…

Read more

دایاں اور بایاں بازو؟

وہ دن دور نہیں جب انسانی اعضاءکے سپیئر پارٹس بھی بازار سے اسی طرح دستیاب ہو ا کریں گے جس طرح ان دنوں پرچون کی دکان سے ضرورت کی چھوٹی موٹی چیزیں اور مارکیٹ سے کاریا موٹر سائیکل کے سپیئر پارٹس دستیاب ہوتے ہیں۔ اس صورت میں ٹانگیں اور بازو وغیرہ تو باہر کسی کنڈے…

Read more

ہتھکڑیوں کا زیور!

اشفاق احمد جب اٹلی میں اردو کے پروفیسر تھے، ایک بار ان کے موٹر سائیکل کا چالان ہوگیا، جب وہ عدالت میں پیش ہوئے اور فاضل جج کو پتہ چلا کہ ’’ملزم‘‘ پیشے کے لحاظ سے پروفیسر ہے تو اس نے انہیں نہ صرف مکمل احترام دیا بلکہ ان کا چالان بھی کینسل کردیا۔ میں…

Read more

میں بولوں کہ نہ بولوں؟

کچھ لوگوں کو کچھ لوگوں سے بلاوجہ عناد ہوتا ہے اور وہ اس کا اظہار کرتے رہتے ہیں، مگر اظہار بھی سلیقہ مانگتا ہے، ان بندوں کے ہاتھ میں استرے آئے ہوئے ہیں جس کا استعمال اتنی بے احتیاطی سے کرتے ہیں کہ بسا اوقاف اپنے ہی کسی ضروری عضو جسمانی سے محروم ہو جاتے…

Read more

کچھ عباس تابش کے بارے میں۔۔۔

(گزشتہ سے پیوستہ ) جیسا کہ میں نے کالم کے شروع میں کہا تھا کہ میری طبیعت ٹھیک نہیں، میں نے اپنے علاج کے لئے جو ادبی ٹوٹکے استعمال کئے ان سے افاقہ تو ہوا ، مگر طبیعت کی بحالی میں ابھی وقت لگے گا ۔ چنانچہ بہت کچھ جو ابھی میں کہنا چاہ رہا…

Read more

کچھ عباس تابش کے بارے میں

جب کبھی میری طبیعت ناساز ہو،میں دوا کے علاوہ ادب کے مطالعے سے بھی اس کے مداواکی کوشش کرتا ہوں گزشتہ تین دن سے میری طبیعت میں خاصی گڑ بڑ ہے،چنانچہ ان دنوں دونوں ادویات سے اپنا علاج کر رہا ہوں۔ میرے دوست مجھے اپنی کتابیں تحفے میں دیتے رہتے ہیں. گزشتہ شام میرے دوست…

Read more

بے وقوف پروانے!

پشاور کے ایک ہوٹل میں رات کو نرم نرم بستر پر دراز ہوتے ہوئے میری نظریں چھت کی طرف اٹھیں تو اپنے سر کے عین اوپر’’ذات کی ایک کوڑھ کرلی‘‘(چھپکلی) کو شہتیروں سے جھپا ڈالے دیکھا، میں ہڑبڑا کر چارپائی سے اٹھا اور سامنے کرسی پر جا کر بیٹھ گیا۔ میرا دوست سونے کی تیاریاں…

Read more

محمد سعید شیخ۔ہم تمہیں بھولے نہیں!

ممتاز افسانہ نگار محمد سعید شیخ تین روز پیشتر انتقال کر گئے۔ میں نے ان کی زندگی میں ان کے اعزاز میں منعقدہ ایک تقریب میں یہ کالم پڑھا تھا۔ آج اس کی اشاعت اس اعلیٰ درجے کے انسان اور افسانہ نگار کو میری طرف سے خراج تحسین کے لئے ہے۔ ’’محمد سعید شیخ سے…

Read more

ہرلباس میں ننگ ِوجود

بہتی گنگا میں ہاتھ دھونا ایک محاورہ ہے اور ہم لوگ گزشتہ 70برس سے مختلف ادوار میں اس محاورے کو فقرے میں استعمال ہوتا دیکھ رہے ہیں۔ متذکرہ محاورے کو فقرے میں استعمال کرنے والے امتحانی نقطہ نظر سے ایسا نہیں کرتے۔ کیونکہ یہ طبقہ کبھی کسی امتحان سے نہیں گزرتا۔بس ہر دور میں بہتی…

Read more

ثبت است برجریدئہ عالم دوامِ ما

تین دن تک جاتی امراء کے درودیوار سےتعزیت کرکے لوٹ آیا۔ اتنے اعلیٰ کردار کی عورتیں ہماری سیاسی تاریخ میں بہت کم ملتی ہیں۔وہ مسلسل برسہا برس سے اپنے شوہر نواز شریف کو ملنے والی ناکردہ گناہوں کی سزا میں ذہنی طور پر شریک رہیں لیکن ’’خاتون اول‘‘ کے کروفر کا سوچا بھی نہیں۔ یہی…

Read more