انتخابات کے نتائج نے سب کو ہلا کے رکھ دیا

صحیح زلزلہ تو 1970ء کا انتخاب لے کر آیا تھا۔ سات دسمبر کی شام جب نتائج آنے لگے تو یوں لگا کہ سب کچھ اُلٹ پُلٹ ہو گیا ہے۔ بڑے بڑے ناموں اور برجوں، جن کے بارے میں خیال بھی نہیں کیا جا سکتا تھا کہ ہاریں گے، کو شکست کا منہ دیکھنا پڑا۔ اُتنے…

Read more

مینڈیٹ کو بھول جائیے!

بھاری مینڈیٹ یا واضح اکثریت تو دور کی بات ہے ۔ لگتا نہیں کہ اِن شاہسواروں میں سے کسی ایک کو سادہ اکثریت بھی مل سکے ۔ ایسا ہوا تو فیصلہ کن کردار انہی قوتوں کا ہو گا جو سیاسی منظر نامے پہ پچھلے دو سال سے حاوی ہیں۔ کسی ایک کی بھی شکل ایسی…

Read more

نیا پاکستان یہ لوٹے بنائیں گے

کیا سنہری پاکستان ہو گا جو یہ مختلف سمتوں سے آئے بھگوڑے تعمیر کریں گے۔ لوٹے تو نون لیگ میں بھی بھرے ہوئے تھے، وہ جو قاف لیگ کی چھتری سے نون لیگ کی چھتری تلے آ گئے۔ کئی ایک نے تو پھر ایسی کارگزاریاں دکھائیں کہ اصلی نون لیگیوں کو پیچھے چھوڑ گئے اور…

Read more

اُمید کی کرن پیدا ہو رہی ہے

پہلی بار اُداس دِلوں میں یہ احساس اُجاگر ہو رہا ہے کہ بہکی ہوئی قوم آخرکار درست سمت پہ چل نکلی ہے۔ یہ اَمر کسی منصوبہ سازی کے تحت نہیں ہوا۔ بس حالات بنتے گئے اور ہم یہاں تک پہنچ چکے ہیں کہ مستقبل کے بارے میں کچھ دھیمی سی اُمید لگائی جا سکتی ہے۔…

Read more

چودھری شجاعت حسین کی یادداشتیں 

سیاست میں تھوڑی سی بھی دلچسپی رکھنے والوں کیلئے یہ مُفید اور دلچسپ کتاب ہے۔ اِس میں کوئی ایسے دھماکہ خیز انکشافات تو نہیں لیکن پڑھنے سے بہت سے حالات کی یاد تازہ ہو جاتی ہے۔ ظاہر ہے کہ میاں صاحبان کا ذکر بہت ہے اور ایسا ہونا بھی چاہیے تھا‘ کیونکہ چودھری شجاعت حسین…

Read more