خود ساختہ ارسطو اور صحافی

خوش قسمتی سے ہم اپنے شہر کے کافی وٹس ایپ گروپس کے ممبر ہیں۔ آج بار بار موبائل کی ٹن ٹن بج رہی تھی ذرا غور کرنے پہ پتہ چلا کہ ایک گروپ میں این آر او کا موضوع زیر بحث ہے۔ گروپ کے آٹھ سے دس افراد اور سرگرم رکن بحث میں شامل تھے۔…

Read more

بچے، سکول اور پچھتاوے

یقیناً میری اس تحریر کو پڑھنے والے ہر عمر کے افراد کسی نہ کسی طرح ملک کے تعلیمی اداروں سے وابستہ ہیں۔ کیا کبھی کسی نے کسی بھی سکول کی کینٹین پہ تازہ موسمی پھل فروخت ہوتے یا تازہ پھلوں کا جوس بھی فروخت کے لیے بنتا دیکھا ہے؟ یقیناً نہیں۔ وجہ؟ وجہ صرف یہ…

Read more

خواتین کی ذمہ داریاں

ایک وقت تھا جب خواتین کا علی الصبح مولوی کی اذانِ فجر سے پہلے جاگنا معمول تھا۔ لسی رڑکنا۔ بھینسوں کا دودھ نکالنا۔ کھیتوں میں کام کرتے گھر کے مردوں کے لیے بھتہ یعنی دوپہر کا کھانا لے کر جانا۔ کھیتی باڑی میں مردوں کا ہاتھ بٹانا۔ کھیتوں سے گھر واپس آکر جھاڑو لگانا برتن…

Read more

چند اچھے برے مجرموں کی کہانیاں

گلی محلے کے چھوٹے موٹے چور ہوں پبلک ٹرانپورٹ کی بسوں میں مسافروں کی جیبوں کا صفایا کرتے جیب تراش ہوں جواری ہوں ٹھگ ہوں کھانے پینے کی اشیاء میں ملاوٹ کرتے ملاوٹ مافیا ہوں یا بہت بڑے بڑے ڈاکو اغوا کار دہشت گرد کرائے کے قاتل۔ میں ایک پولیس والا ہونے کی حیثیت سے…

Read more

ماسٹر مختار صاحب

بہترین استاد ہونے کے لیے کسی بھی انسان کا ایک اچھا انسان ہونا بہت ضروری ہے؛ کیوں کہ استاد ایک قوم کا معمار اور مسیحا ہونے کے ساتھ ساتھ اپنے شاگردوں کے لیے نمونے کی حیثیت رکھتا ہے۔ کسی نے کیا خوب کہا تھا "شاگرد کی شخصیت استاد کی شخصیت کی آئنہ دار ہوتی ہے"۔…

Read more

ایک بے بس مسافر اور پولیس افسر

دورانِ سفر بہت سارے اچھے برے اور کبھی کبھی ناقابلِ فراموش واقعات اور حادثات سے انسان کا واسطہ پڑتا رہتا ہے۔ ایک دفعہ میں لاہور پولیس ٹریننگ کالج چوہنگ سے بس پہ سوار ہوا اور میری منزل کافی دور تھی۔ تقریباً مسلسل پانچ گھنٹے گاڑی کو بغیر کسی وقفے کے چلنا تھا۔ میں نے اپنی…

Read more

ریشمی رومال سے ٹشو پیپر تک

ایک وقت تھا جب محبوبا ئیں اپنے سچے عاشقوں کو اپنے ہاتھ سے کڑھے ہفتوں کی محنت کے بعد ریشمی کپڑے کے دیدہ زیب اور مختلف ڈیزائنوں کے پھول کناری والے رومال بطور تحفہ بڑے خلوص اور چاء(چاؤ) سے بنا کے دیا کرتی تھیں۔ کچھ شدت پسند محبوبائیں رومال پہ سنہری ڈوری سے دل کا…

Read more

پولیس والوں کے گزر اوقات

جب کوئی جوان پولیس میں بھرتی ہوتا ہے تو اس کی زندگی کا ایک نیا باب شروع ہو جاتا ہے۔ جس دن بھرتی کی خبر اہل و عیال میں پہنچتی ہے رشک آفریں جوان کے لیے رشتوں کی آمد کا سلسلہ شروع ہو جاتا ہے۔ مامے چاچے پھوپھیاں ماسیاں جوان کی نظر اتارتے دکھائی دیتے…

Read more

ناکوں پر پولیس والوں پر کیا گزرتی ہے؟

مہذب باشعور اور اچھی تربیت کے حامل پاکستانی جب کہیں پولیس کا ناکہ لگا دیکھتے ہیں تو اپنی گاڑی کی رفتار بہت آہستہ کر لیتے ہیں۔ رات کے اوقات میں اپنی گاڑی کی لائٹس مدھم کر لیتے ہیں پولیس ناکہ پہ کھڑے جوان کو ہرگز علم نہیں ہوتا کہ جس گاڑی یا موٹر سائیکل سوار…

Read more

سکول بیگ میں شراب اور چشتیاں کے ٹھگ

مجھے دو دن پہلے اسلام آباد سے ایک پی ٹی سی ایل نمبر سے کال آئی میں حیران ہوا کہ صاحب جی کا فون؟ پھر دماغ میں چند الفاظ جمع کیے یاد کیا کہ آخری بار جب ہماری بات ہوئی تھی تو کیا کیا مسائل زیر بحث رہے تھے۔ لمحہ بھر کو سوچا کہ اب…

Read more