خون کے رشتے یا خلوص کے رشتے

منظر جاوید کا تعلق جھنگ کے ایک دور افتادہ اور پسماندہ گاؤں سے ہے جبکہ میں خیبر پختون خواہ میں اسی طرح کے ایک گاؤں سے تعلق رکھتا ہوں۔ ہم دونوں کی زبان روایات اور علاقے ایک دوسرے سے بہت مختلف ہیں۔ ظاہر ہے کوئی رشتہ داری بھی نہیں۔ ہم دونوں کو ایک دوسرے سے…

Read more

میاں نواز شریف کی خاموشی، خوف یا حکمت؟

پانامہ کیس میں حکومت کے خاتمے کے چند دن بعد نواز شریف پارٹی اجلاس میں شرکت کے لئے مری سے اسلام آباد روانہ ہوئے تو اس وقت تک نواز شریف کے حامیوں میں ایک اداسی بھری دہشتناک خاموشی پھیلی ہوئی تھی لیکن جوں ہی اس کی گاڑی اسلام آباد سے چند کلومیٹر دور بھارہ کہو کے مقام پر پہنچی تو غیر متوقع طور پر عوام کا ایک سیلاب اُمڈ آیا۔

جس نے کئی عشرے پہلے لاہور ریلوے سٹیشن پر بھٹو کے استقبال کی یاد تازہ کر دی۔ اب آنے والے شب و روز کا منظرنامہ بھی تقریباً اس جیسا ہی تھا۔ اس چھوٹے سے قصبے میں دیوانہ وار استقبال نے مشکل ترین ایّام میں میاں صاحب کے حوصلے کو بھی بڑھایا اور آئندہ کے لئے اس کی مناسب منصوبہ بندی اور پالیسی کو بھی واضح کیا۔

Read more

فطرت کے اٹل اُصول

اس مملکت خداداد نے ہمیشہ یونہی تو نہیں رہنا ہے۔ آمریتوں، کرپشن، اقرباء پروری، جبر و استحصال اور بربریت کے منحوس سایوں میں اس وطن کے خاک نشینوں نے بہت ظلم سہہ لئے، فطرت کا قانون ہے اور اٹل قانون کہ تمام منفی عوامل ایک مہلت کے اندر پنپتے اور فنا ہوتے ہیں لیکن تکبّر اور جبر کا ہمیشہ یہی مزاج ہوتا ہے کہ وہ فطرت کے قوانین پر اپنی طاقت کو ترجیح دیتے ہیں لیکن مظلومیت کو فطرت ایک غیر محسوس طریقے سے سہارا دیتی اور قوّت فراہم کرنے میں مگن ہوتی ہے اور پھر جب ہم تاریخ کی طرف مڑ کر دیکھتے ہیں تو ہر عمر ہر تہذیب اور ہر زمانہ بے شمار مثالوں سے بھرا دکھائی دیتا ہے۔ حوالہ خواہ افراد کا ہو یا مجموعی معاشرے کا فطرت کے یہی اٹل قوانین ہی ہیں جو فیصلہ کرتے ہیں اور آخری فیصلہ۔

Read more

عمران خان کے لئے ضروری یو ٹرن

میں عمران کو ایک اثاثے کے طور پر ہمیشہ دیکھتا رہا ہوں اور میری یہ رائے اس وقت بھی تھی جب وہ اقتدار سے کوسوں دور تھے۔ عمران خان بعض معاملات میں دو سرے سیاستدانوں پر برتری لئے ہوئے ہیں۔ مثلاً ایک کھلاڑی کی حیثیت سے وہ بین الاقوامی شہرت رکھتے ہیں اور سب سے بڑھ کر ان کے پاس یوتھ کا ایک بڑا لاٹ بھی موجود ہے۔

اگر ان چیزوں (خوبیوں ) کو وہ قدرے دانائی کے ساتھ استعمال کرنا شروع کردیں تو ان کی سیاسی کامیابی کے امکانات کئی گنا بڑھ سکتے ہیں، لیکن یہاں سوال یہ ہے کہ ان خوبیوں کو استعمال میں لانے کا طریقہ کار کیا ہونا چاہیے؟

عمران خان کے ارد گرد اس وقت تین طرح کے کارکن ہیں، ایک وہ جینوئن کارکن جوسمجھتے ہیں کہ نظام کی تبدیلی کے لئے ان کی اور عمران خان کی سوچ ایک جیسی ہے، دوسرے وہ کارکن ہیں جن کا خیال ہے کہ ان کی شکل عمران خان سے ملتی ہے اور تیسرے وہ جو ان کے ساتھ تصویر اتروا کر یا ان کی گاڑی کے ساتھ لٹک کر اسے اپنے مقاصد کے لئے استعمال کرتے ہیں۔

Read more

طاہر داوڑ کی زندگی سے جنازے تک

اپنے اغوا ہونے سے صرف تین دن پہلے طاہر داوڑ اور میں اس سکول سے باہر اکٹھے نکل آئے، جہاں ہم دونوں کے بیٹے زیرِ تعلیم ہیں اور ہمیں سکول انتظامیہ نے دوسرے بچوں کے والدین سمیت مشاورت کے لئے ایک ہی دن بلایا تھا کار پارکنگ میں آکر طاہر داوڑ نے میرے کندھے پر…

Read more

یہ گالیاں کس کو پڑ رہی ہیں؟

ایک بھرے جلسے میں جب ہوا کے گھوڑوں پر سوار اس کے جذباتی کارکن اس کے سامنے تھے تو سٹیج پر آ کر عمران خان نے حسب معمول بلوچستان کے ایک غریب بچے کی بھوک اور پیاس کی کہانی سنائی پھر ورلڈ کپ اور شوکت خانم سے ہوتا ہوا اپنے ہر مخالف کو چور ڈاکو…

Read more

مطیع اللہ جان ۔ دربدری کی ایک تاریخ

لگ بھگ تین عشرے پرانی بات ہے، میں پشاور سے انٹر کر کے اسلام آباد آیا اور بی اے میں داخلہ لیا تو یہاں کی فضا مجھ جیسے دیہاتی نوجوان کے لیئے قدرے نامانوس اور اجنبی سی تھی، لیکن اپنے مخصوص سیاسی خیالات اور لکھنے پڑھنے کے رجحان نے میری شرماھٹ اور تنہائی کو تیزی…

Read more

حضور کریمٌ کی سیاسی زندگی

اگر ہم سکندر اعظم، نپولین اور ہٹلر کو لیں تو ان کی زندگی ایک سپہ سالار اور فاتح جنگ سے بڑھ کر کوئی نہیں۔ گوتم بدھ کی زندگی ریاضت اور عبادت کے گرد گھومتی ہے، جبکہ افلاطون اور ارسطو صرف حکیم اور فلسفی تھے، جبکہ اس کے بر خلاف رسولِ عربیٌ کی زندگی ہمہ جہت…

Read more

آزادی کی تاریک سرنگ

اس ملک کا پرانا نام اسمارا تھالیکن انسویں صدی میں جب اٹلی نے اس پر قبضہ کیا تو اس کا نام بھی تبدیل ہو گیا اور وہ اسمارا سے اریٹیریا بن گیا۔ دوسری جنگ عظیم کے بعد اٹلی اپنے مسائل سے دوچار ہوا تو اریٹیریا ہمسایہ ملک ایتھوپیا کو سونپ کر چلتا بنا، ایتھوپیا نے…

Read more

پرنٹ میڈیا۔ تاریخ اور مستقبل

1609ء میں جرمنی سے پہلا مطبوعہ خبرنامہ (اخبار ) اویساریشن آرڈرزیٹنگ ( Avisa Relation order zeitung) شائع ہوا جبکہ انگریزی صحافت کی ابتدا 13 سال بعد ہوئی جب 1622ء میں لندن سے ویکلی نیوز کا اجراء ہوا۔ لیکن اردو صحافت کو پہلا قدم اٹھانے کے لئے ابھی دو سو سال کا انتظار کرنا ہی تھا۔…

Read more