دہشتگری، پاکستان اور بیانیے کا بحران

گزشتہ سترہ سالوں میں پاکستان میں دہشتگردی کے ہزاروں واقعات رونما ہوئے جن میں عام شہریوں اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکاروں سمیت لاکھوں معصوم جانیں ضائع ہو چکی ہیں۔ پاکستان میں دہشتگردی کی ہر واردات کے بعد یہاں کے سیاستدانوں، حکمرانوں، تجزیہ نگاروں اور دیگر ماہرین کو موقع میسر آ جاتا ہے…

Read more

ڈاکٹر عُمر سیف کی خدمات کے اعتراف میں

”عُمر سیف اعلیٰ عہدے رکھنے والے لوگوں کی کمیونٹی کی بدنامی کا سبب بن رہے ہیں۔ کیونکہ ان جیسے محنتی شخص کی کارکردگی سے متاثر ہو کر عام لوگ دیگر اعلیٰ عہدے رکھنے والوں کو نکما سمجھنا شروع کر دیتے ہیں۔ “ آج سے تین سال قبل الحمرا ہال میں عالمی افکارِ تازہ کانفرنس میں شرکت کا موقع ملا۔ کانفرنس کے ایک مہمان سپیکر نے اُس وقت جناب عُمر سیف کے بارے میں یہ الفاظ اداکیے تھے۔ جونہی ڈاکٹر عُمر سیف کا تصور میرے ذہن کی دیواروں پہ اُبھرتا ہے، یہ جملے اب بھی میرے سماعتوں سے ٹکرانے لگتے ہیں۔ کس قدر خوبصورتی سے یہ الفاظ عمر سیف کی شخصیت کا احاطہ کرتے ہیں!

Read more