چورن، بنٹے والی بوتل اور نشتر

سر درد ہو تو لاکھ اینٹی بائیوٹک کھائیں کوئی فرق نہیں پڑتا۔ فشار خون اوپر نیچے ہو جائے تو ذیابیطس کی گولی اثر نہیں کرتی۔ گردہ اپنا فعل چھوڑ دے تو ڈائلیسس کے بغیر گزارہ نہیں۔ دل کی تکلیف کے لئے کوئی الرجی کی دوا زبان کے نیچے نہیں رکھتا۔ کھانسی کا شربت جوڑوں کے…

Read more

اویس کو سیلفیوں کی نہیں ایک سچے آدمی کی ضرورت ہے

محمد اویس سے ملیے۔ اویس کراچی میں رہتے ہیں۔ پڑھے لکھے ہی نہیں ، پاکستانی معیار سے اعلی تعلیم یافتہ ہیں۔ سیاسیات میں ایم اے کیا ہے۔ اویس مسکلر ڈیسٹرافی نامی جسمانی معذوری سے لڑ رہے ہیں۔ اس لڑائی میں انہوں نے ہمت نہیں ہاری پر اب ان کے حوصلے کچھ شکستہ ہو چلے ہیں۔…

Read more

ظفراللہ خان کو بتانا تھا۔۔۔  

ظفر اللہ خان کا فون تھا۔ فون اٹھاتے ہی، مانو، ژالہ باری شروع ہو گئی۔ ظفرکبھی دوست ہوا کرتا تھا۔ اب بھائی ہے۔ وہ بھی سمجھ نہیں آتی کہ چھوٹا یا بڑا۔ عمومی حالت میں تو میں ہی بڑا رہتا ہوں اور اس کی محبت سمیٹتا رہتا ہوں لیکن کبھی کبھی جب اسے ناصح بننا…

Read more

انور سعید صاحب کے بیٹے! عزیز از جان گدھے

سکول میں جماعت ہشتم کے بورڈ کے امتحان کا نتیجہ آیا تو توقعات سے شاید بدتر تھا یا بہتر، یہ تو مجھے آج تک نہیں پتہ لیکن انتظامیہ نے یہ فیصلہ کیا کہ سکول میں اب نہم کے پانچ سیکشنز سے لائق فائق بچوں کو چھانٹ کر الگ کرنا ہے اور ان کا ایک الگ…

Read more

احمدیوں پر لکھا جانے والا آخری مضمون

یہ بات تین دہائیوں سے زیادہ پرانی ہے۔ پلوں کے نیچے سے بہت سا پانی بہہ گیا ہے پر پل کے دو کنارے اور دور ہو گئے ہیں۔ موسم زیادہ بے رحم ہو گیا ہے اور سوچ، برداشت اور رواداری کے سارے پرندے روٹھ کر کسی اور دیس کی جھیلوں کو مراجعت کر گئے ہیں۔…

Read more

چھوڑیں صاحب، جناح کو کیا پتہ

ہر شاخ پر الو بیٹھا ہو یا ہر چوراہے پر منصف، دونوں صورتوں میں انجام کی نقش گری کچھ مشکل نہیں ہے۔ جذباتیت کا ڈھول گلے میں لٹکائے مداری گلیوں میں رقصاں ہیں اور دانشمندی اپنی منقار چھپائے کہیں گم ہے۔ یہ طے ہے کہ ہر کسی نے آٹھویں جماعت کی اسلامیات کی کتاب پڑھ…

Read more

اوریا مقبول جان کا جاپانی جھوٹ۔۔۔۔ ذرا ہوشیار رہیے

 خواجہ معین الدین کے لازوال ڈرامے تعلیم بالغاں کا ایک منظر ہے۔ استاد مولوی صاحب ایک شعر کی تشریح کی کوشش کرتے ہوئے اپنے طلبا پر رعب ڈالنے کے لیے کہتے ہیں "اس شعر میں ایک تلمیح ہے" غریب طالب علم سٹپٹا کر پوچھتے ہیں کہ "مولوی صاحب، یہ تلمیح کیا ہوتی ہے؟" اب مولوی…

Read more

مدنی ریاست میں غلام اور لونڈیاں

جناب عمران خان کی بطور وزیراعظم پہلی تقریر میں ہر پانچ جملوں کے بعد مدینہ کی ریاست کا ذکر تھا۔ ہماری خوش عقیدگی کا یہ تقاضا ہے کہ یہ اصرار کیا جائے کہ ایک جدید فلاحی ریاست کے لیے سب سے بہترین نمونہ مدنی ریاست ہے۔ اسی ایک سانس میں ہم سکنڈے نیویا کے ممالک…

Read more

دھاندلی خلاصہ بلیٹن

دھاندلی کے بارے میں تمام آراء سننے کے بعد میں نے مناسب سمجھا کہ اس کا خلاصہ کر دیا جائے تاکہ جملہ کشتگان سیاست ایک ہی پوسٹ سے بہرہ مند ہوں اور ادھر ادھر لڑھکتے نہ پھریں۔ تمام تجزیے سننے اور پڑھنے کے بعد یہ درویش اس نتیجے پر پہنچا ہے کہ ہوائی اور نادیدہ…

Read more

جبران ناصر، بھیجہ فرائی نہ کر

اے خبری، سب کو بتا دے۔ سیدھے ہو جائیں۔ جس کو کان نہیں ہوتے اس کے دو کانوں کے بیچ سر کر دے۔ جو نہیں سنتا، سن لے، جو نہیں جانتا، جان لے۔ ادھر ووٹ کی عزت مانگنے کا۔ ووٹ کس کو دینے کا۔ جس کی عزت کرنے کا۔ عزت کس کی کرنے کا۔ جس…

Read more