رام چندر جی اور نمک کا آدمی

اس شور سے،الزامات کی سیاست سے، جھوٹے دعووں، وعدوں سے کچھ دیر کے لیے دور چلے چلتے ہیں۔ پانچ سو قبل مسیح کے ہندوستان میں، رام چندر جی کے دور میں۔ کہتے ہیں، رام چندر جی اپنے پیروکاروں کو اکثر ایک کہانی سنایا کرتے تھے۔ ساحل پر چہل قدمی کرنے والوں کی کہانی، جو ایک…

Read more

عمران خان کی بچت صدر بننے میں ہے

آپ سے ایک سوال ہے: کیا اُن چیزوں کے لیے جنگ جائز ہے، جنھیں ہمیں چھو کر محسوس نہیں کرسکتے؟ یعنی بجائے زر، زن اور زمین کے کیا اہم افکار، نظریات، حب الوطنی جیسے غیرمرئی معاملات میں ایک دوسرے پر بندوق تان سکتے ہیں؟ گیبرئیل گارسیا مارکیز کے شاہ کار "تنہائی کے سو سال" کے…

Read more

الیکشن کے بعد کی پراسرار دنیا میں خوش آمدید

 ہم ناول کیسے لکھتے ہیں؟ پہلے مرحلے میں ہم منصوبہ بندی کرتے ہیں، کاغذ پر ایک خاکہ بناتے ہیں، کردار تراشتے ہیں، تحقیق کرتے ہیں، اسلوب چنتے ہیں، ناول کی کائنات کا تعین کرتے ہیں۔ اور تب دوسرے مرحلے کا آغاز ہوتا ہے، اب ہم ہر شے سے لاتعلق ہو کر لکھنے کی میز تک…

Read more

جمہوریت پسند افراد اور جیت کا واہمہ

”ہم ڈٹ گئے ہیں، اٹھ کھڑے ہوئے ہیں، مغرب کو شکست ہونے کو ہے، امریکا نیست و نابود ہوجائے گا!“ ایسے دعوے ہم نے ماضی قریب میں سنے۔ اور ہم انھیں سنتے آئے ہیں، مذہبی عسکریت پسندوں (ہمارے چچا، ہمارے بھائیوں، ہمارے بیٹوں) کی جانب سے، پیش گوئیوں میں گردن تک دھنسے کالم نگاروں کی…

Read more

انعام، جو ہم نے کھو دیا

رقص تخلیق کا اوج ہے ۔ رقص، جس کی بلند ترین سطح پر عمل اور عامل ایک ہوجاتے ہیں، رقص اور رقاص کی تفریق مٹ جاتی ہے۔ تخلیق اور تخلیق کار میں دوئی نہیں رہتی۔ یہی عمل ہمیں ہر تخلیقی صنف میں دکھائی دیتا ہے۔ ہم مائیکل اینجیلو کو ’’ڈیوڈ‘‘ میں ، ڈی ونچی کو…

Read more

خان صاحب ، کراچی میں ناکام جلسے کی پیشگی مبارک باد

صاحبو، پی ٹی آئی 12 مئی کو کراچی میں ایک ناکام جلسہ کرنے جارہی ہے۔ مستقبل بینی کی صلاحیتوں سے محرومی کے باوجود یہ وہ دعویٰ ہے، جو فقیر اعتماد سے کر سکتا ہے کہ یہ سورج کی طرح عیاں ہے۔اس کے لیے راکٹ سائنس کی ضرورت نہیں۔ ناکام جلسے کی پیش گوئی کے لیے…

Read more

خبردار، یہ ایک متعصبانہ تحریر ہے!

مترو، لسانی شناخت ایک حساس اور پرپیچ معاملہ۔ بالخصوص ہجرت کے بعد سندھ میں آ کر بسنے والوں کے لیے معاملہ عرصے سے سنگین اور غمگین ہے۔ یہ طبقہ باقیوں سے نالاں، باقی اِن سے متنفر۔ ”جاگ مہاجر جاگ “جیسے نعروں سے حالات مزید کٹھن اور کڑک ہوجاتے ہیں۔ ہمارے نزدیک اردو بولنے والوں کو…

Read more

نواز شریف اور بھٹو کی کال کوٹھڑی

میاں نواز شریف نے منصف اعلیٰ پر جوڈیشل مارشل لاکا الزام عاید کیا، تو یکدم ذہن میں ذوالفقار علی بھٹو کے پھانسی سے سات گھنٹے قبل کہے جانے والے الفاظ گونجنے لگے۔ یہ 3 اپریل 1979کی شام کا ذکر ہے، جب پاکستان کا معزول وزیرا عظم پنڈی جیل کی ایک کال کوٹھڑی میں، سوجے ہوئے…

Read more

نواز شریف اور کرم کا قانون

کائنات مقام بازگشت ہے، ہر عمل کا یکساں ردعمل ہوگا، کرم کے قانون سے مفر نہیں۔ 2008 کے الیکشن کے چند روز بعد جب یکدم پرویز مشرف غیرمتعلقہ ہوئے، پیپلزپارٹی کے پھریرے لہرا نے لگے، تب کراچی کی ایک نیم گرم شام چند صحافی چائے پر اکٹھے ہوئے تھے اور یہ موضوع چھڑا تھا کس…

Read more

اردشیر کائوس جی کی باتیں

قدیم دانش کے پرچارک، دیپک چوپڑا نے کہا تھا: ’’عمل، ایک یاد پیدا کرتا ہے!‘ یاد۔۔۔ ہاں تیکھے اسلوب کے حامل، رسیلے کٹیلے، گجراتی تڑکے کے ساتھ اردو بولنے والے اُس خوش لباس شخص اردشیرکائوس جی کا ہر عمل، ایک دمکتی یاد کی صورت، آج ہمارے ذہنوں میں محفوظ ہے۔ اور اِسی بابت سوچتے ہوئے،…

Read more