مسلم لیگ (ن) کا مستقبل؟

ایک کروڑ اٹھائیس لاکھ ووٹرز، سینیٹ اور پنجاب اسمبلی کی سب سے بڑی اور قومی اسمبلی میں دوسری بڑی جماعت ہونے کے باوجود، مسلم لیگ (ن) پر جو اضمحلال طاری ہے، وہ کچھ زیادہ قابلِ فہم نہیں۔ اقتدار کے کھیل میں اتار چڑھاؤ کوئی انہونی بات نہیں۔ خود مسلم لیگ کو بھی پہلی بار اس…

Read more

انتخابی عمل اور پوسٹ ٹروتھ

’ہم سب‘ پر اختر علی سید صاحب کا پر مغز تجزیہ نظر سے گزرا۔ واقعہ یہ ہے کہ سیاسی حرکیات پر کفتگو کرنے کا استحقاق سیاسیات اور سماجی علوم کے ماہرین ہی کا ہے۔ ہم نے یہ فریضہ کچھ اور لوگوں کو سونپ رکھا ہے۔ اس کا ایک نتیجہ ہے کہ سیاست کے مباحث ہمیشہ…

Read more

عمران خان کی کامیابی کے اصل محرکات

سماجی خدمت، کیا کسی کو اقتدار کے ایوانوں تک پہنچا سکتی ہے؟ شوکت خانم ہسپتال کا قیام، کیا عمران خان کی سیاسی کامیابی کی بنیاد ہے؟ عمران خان کی سیاسی زندگی میں، جس کارنامے کا تذکرہ سب سے بلند آہنگ تھا، وہ یہی ہسپتال کا قیام ہے۔ کہا گیا کہ جو ایسا شاندار ہسپتال بنا…

Read more

مولانا فضل الرحمٰن کے سوالات – کالم جو چھپ نہیں سکا

مولانا فضل الرحمٰن نے کچھ سوالات اٹھائے ہیں۔ کیا ریاستی ادارے اِن سے صرفِ نظر کے متحمل ہو سکتے ہیں؟ یہ باور نہیں کیا جا سکتا کہ کوئی پاکستانی اپنی فوج کے خلاف ہو۔ یہ تصور بھی محال ہے کہ کوئی عدلیہ کو بے توقیر کرنا چاہے گا۔ فوج مضبوط نہ ہو تو ملک بیرونی…

Read more

کیا شہباز شریف قائد حزب اختلاف بننے کے اہل ہیں؟

انتخابی عمل نے سیاست کا حقیقی بیانیہ تبدیل نہیں کیا، اس پر مہرِ تصدیق ثبت کی ہے۔ نواز شریف کا بیانیہ آج بھی سیاست کا اصل بیانیہ ہے۔ متحدہ اپوزیشن کے پاس اس کے سوا کوئی راستہ نہیں تھا کہ وہ اس کا علم اٹھا لے۔ کہا جا سکتا ہے کہ آج تحریکِ انصاف اور…

Read more

سیاسی اتحاد ناگزیر ہیں

ایک طرف تحریکِ انصاف ہے اور اس کے اتحادی ق لیگ اور ایم کیو ایم۔ دوسری طرف ن لیگ ہے اور اس کے اتحادی پیپلز پارٹی وغیرہ۔ عمران خان ق لیگ کے اکلوتے وارث گجرات کے چودھریوں اور ایم کیو ایم کے بارے میں جو کچھ کہتے رہے ہیں، ٹی وی چینلز پر ہم ان…

Read more

اصل جھگڑا عمران خان سے نہیں ہے

تحریک انصاف کی ممکنہ حکومت بنیادی مسئلہ نہیں، اس کا نتیجہ ہو گی۔ اپوزیشن کو نتیجے پر نہیں، مسئلے پر نظر رکھنی ہے۔ اسے دیوار سے سر نہیں ٹکرانا، پسِ دیوار دیکھنا ہے۔ جس کی نظر میں، عمران خان ملک کے سب سے مقبول راہنما نہیں، وہ بھی اس سے انکار نہیں کر سکتا کہ…

Read more

انتخابات کے نتائج کیا کسی بڑی سماجی تبدیلی کی خبر ہیں؟

حرکت زندگی کا بنیادی وصف ہے۔ جمود موت کا دوسرا نام ہے۔ یہی سبب ہے کہ بد ترین حالات میں بھی زندگی کا سفر رکتا نہیں۔ زندگی، عراق میں، اس وقت بھی رواں دواں رہتی ہے جب آسمان سے بارش کی طرح بارود اور آگ‘ برستے ہیں۔ افغانستان میں بھی اس کے قدم رکتے نہیں…

Read more

’مٹی پاؤ‘ فلسفہ ہی نظریہ ضرورت ہے

انتخابات ہو چکے۔ نتائج تشکیک اور اعتراضات کی زد میں ہیں۔ ایک رائے یہ ہے کہ جو ہوا، سو ہوا۔ اب ہمیں آگے کی طرف دیکھنا چاہیے۔ راکھ کریدنے سے کیا حاصل۔ یہ وہی فلسفہ ہے، چوہدری شجاعت حسین صاحب نے دو لفظوں میں جس کا مکمل ابلاغ کر دیا: 'مٹی پاؤ‘۔ اس میں کیا…

Read more

عمران خان کی فتح کے خلاف ہیجان پھیلانا پاکستان کے لئے تباہ کن ہے

صبر یا ہیجان؟ اس سوال کا تعلق حکمتِ عملی سے ہے، نفسِ واقعہ سے نہیں۔ واقعے کے بارے میں ایک ہی رائے ہے الا یہ کہ کوئی کان اور آنکھیں بند کر لے۔ جس کی تمہید چند ماہ قبل باندھی گئی تھی، وہ فیصلہ 25 جولائی کو سنا دیا گیا۔ درمیان میں جو شب و…

Read more